ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

مظفرپورشیلٹرہوم کے شرمناک واقعہ کےلئے نتیش کمارکوشرم آنی چاہئے: سواتی مالیوال

  • Share this:
مظفرپورشیلٹرہوم کے شرمناک واقعہ کےلئے نتیش کمارکوشرم آنی چاہئے: سواتی مالیوال
دہلی خواتین کمیشن کی چیئرپرسن سواتی مالیوال : فائل فوٹو

دہلی خواتین کمیشن کی چیئرپرسن سواتی مالیوال جے ہند نے مظفرپورشیلٹر ہوم کے واقعہ کو انسانیت کو شرمسارکردینے والا واقعہ قراردیا ہے۔ انہوں نے نیوز 18 ہندی کودیئے ایک انٹرویو میں کہا اتنا شرمناک واقعہ دہلی خواتین کمیشن کی چیئرپرسن کی مدت کارکے دوران یا پہلے میں نے توکبھی نہیں سنی۔


انہوں نے کہا کہ بے حد افسوسناک ہے کہ شیلٹرہوم میں تحفظ کے لئے لائی گئی 34 ایسی لڑکیوں کی آبروریزی ہوتی ہے، جن کے ساتھ پہلے بھی یہ واقعہ ہوچکا ہے یا وہ انسانی اسمگلنگ کی شکاررہی ہیں یا ان کے اپنے بھائی بندھوہی ان کے ساتھ آبروریزی کرتے تھے۔ اس واقعہ کے لئے پوری طرح بہارحکومت ذمہ دار ہے۔


سواتی مالیوال نے کہا کہ ایسی لڑکیوں کو حکومت کے گھر(شیلٹر ہوم) میں اس لئے رکھا جاتا ہے کہ وہاں انہیں تحفظ فراہم کی جائے۔ پیارکے ساتھ اچھا ماحول دیا جائے، لیکن بہار کے شیلٹرہوم میں اس سب کے بجائے ایک ہنٹروالا چچا آتا ہے اورنیتاجی آتے ہیں جورات میں ان کے ساتھ عصمت دری کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اپریل میں رپورٹ آجاتی ہے، اس کے باوجود بہارحکومت سوتی رہتی ہے۔ یہ خواتین واطفال محکمہ کی وزیرکس منہ سے اپنی کرسی پربیٹھی ہے۔ اتنے زیادہ بے شرم لوگ میں نے اپنی زندگی میں نہیں دیکھے۔


مالیوال نے یہ بھی کہا کہ نتیش کمارتک کواپنی کرسی چھوڑدینی چاہئے۔  وہ ڈبلیو سی ڈی وزیراس کو شرم آنی چاہئے کہ وہ ابھی تک اس عہدے پر قائم ہے۔ کیا اس کوفوراً وہاں سے نکلنا نہیں چاہئے؟ انہوں نے کہا کہ اس معاملے میں کیا جانچ ہوئی ہے؟ جب میڈیا کا اتنا دباو پڑا توسی بی آئی کو کیس بھیج دیا۔ برجیش ٹھاکرہنٹروالاچچا ہے، جوگرفتارہوا ہے، کتنی مسکراہٹ تھی اس کے چہرے پرکیونکہ اس کو معلوم ہے کہ سسٹم میں اس کا کوئی کچھ نہیں بگاڑسکتا۔

سواتی مالیوال آگے کہتی ہیں کہ میں دہلی کے بھی تمام شیلٹرہوم میں گئی ہوں، جہاں بہت پریشانیاں ہیں۔ کھانے کے مسائل ہیں، رہنے کی پریشانی ہے، ان کی بازآباد کاری کے لئے سہولیات نہیں ہیں، ان کو تفریح کی کوئی سولیات نہیں ہیں، میں جب پہلی بارگئی تو 10-10 سال پرانی لڑکیوں کو باہربھی نکالا۔ وہاں تو لڑکیوں کی عصمت دری ہورہی ہے، نیتا جی اور افسرآرہے ہیں اورلڑکیوں کولےکرجارہے ہیں۔ انسانیت کوشرمسارکرنے والی اتنی خراب حرکت تو دہلی میں نہیں ہے۔ اگریہاں ایسا ہوتا تو ہم لوگ انہیں چھوڑتے نہیں بلکہ ان کو سرعام پیٹتے۔
First published: Aug 03, 2018 03:55 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading