உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    عدم برداشت پر پارلیمنٹ میں بحث، جے ڈی یو نے کیا 5 وزراء کی برطرفی کا مطالبہ

    نئی دہلی۔ حکومت کے لئے یہ ہفتہ پارلیمنٹ میں مشکل بھرا ہو سکتا ہے۔

    نئی دہلی۔ حکومت کے لئے یہ ہفتہ پارلیمنٹ میں مشکل بھرا ہو سکتا ہے۔

    نئی دہلی۔ حکومت کے لئے یہ ہفتہ پارلیمنٹ میں مشکل بھرا ہو سکتا ہے۔

    • IBN7
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی۔ حکومت کے لئے یہ ہفتہ پارلیمنٹ میں مشکل بھرا ہو سکتا ہے۔ آج دونوں ایوانوں میں اپوزیشن جماعتوں نے عدم برداشت پر بحث کے لئے نوٹس دیا ہوا ہے۔ لوک سبھا میں یہ معاملہ آج کے لئے درج ہے۔ لوک سبھا میں اس پر دوپہر 12 بجے کے بعد بحث ہو گی۔ اسے لے کر حکومت اور اپوزیشن کے درمیان گرماگرمی کے پورے آثار ہیں۔ کانگریس اور جے ڈی یو نے راجیہ سبھا میں ضابطہ 267 کے تحت اس پر بحث کے لئے نوٹس دیا ہے۔

      جبکہ لوک سبھا میں کانگریس اور سی پی ایم نے ضابطہ 193 کے تحت بحث کرانے کا نوٹس دیا ہے۔ ضابطہ 193 کے تحت ووٹنگ کا اصول نہیں ہوتا۔ جے ڈی یو ان پانچ وزراء کو برطرف کرنے کا مطالبہ کر رہی ہے جن پر متنازعہ بیان دینے کا الزام ہے۔ جے ڈی یو نے مذمتی تجویز بھی پاس کرنے کی مانگ کی ہے۔ حکومت کی طرف سے وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ اس پر بیان دیں گے۔

      وہیں سماج وادی پارٹی کے رہنما رام گوپال یادو نے کہا ہے کہ عدم برداشت کے معاملے پر جتنی بحث ہو رہی ہے، اتنا ہی نقصان ہو رہا ہے۔ اس معاملے پر زیادہ بڑھا چڑھا کر بحث نہ ہو۔ ہندستان سے زیادہ عدم برداشت پوری دنیا میں کہیں نہیں ہے۔
      First published: