ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

کیجریوال پر کمار کو نہیں ’’وشواس ‘‘، کورٹ نے کہا پتہ نہیں کب ’’جھوٹ ‘‘ بولا

عام آدمی پارٹی سے ناراض چل رہےکمار وشواس نے جمعرات کے روز دہلی ہائی کورٹ میں کہا کہ مرکزی وزیر ارون جیٹلی کے خلاف ان کے بیان اروند کیجریوال سے حاصل ہوئی معلومات کی بنیاد پر تھے۔ک

  • Share this:
کیجریوال پر کمار کو نہیں ’’وشواس ‘‘، کورٹ نے کہا پتہ نہیں کب ’’جھوٹ ‘‘ بولا
دلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال اور مرکزی وزیر خزانہ ارون جیٹلی: فائل فوٹو۔

عام آدمی پارٹی سے ناراض چل رہےکمار وشواس نے جمعرات کے روز دہلی ہائی کورٹ میں کہا کہ مرکزی وزیر ارون جیٹلی کے خلاف ان کے بیان اروند کیجریوال سے حاصل ہوئی معلومات کی بنیاد پر تھے۔کمار نے کورٹ میں جسٹس راجیو سہائے انڈلا سے کہا کہ اس تعلق سے کوئی اور بیان دینے یا معافی مانگنے سے قبل وہ یہ جاننا چاہتے ہیں کہ کیا کیجریوال نے ان سے جھوٹ بولا تھا۔


وشواس نے کہا کہ وہ یہ بھی جاننا چاہتے ہیں کہ کیا کیجریوال نے جیٹلی سےمعافی مانگنے سے قبل جھوٹ بولا تھا یا ان کے معافی مانگنے کی وجہ جھوٹ جیسی ہے ۔قابل ذکر ہے کہ کورٹ نے ویشواس کو 26 اپریل کو حکم دیا تھا کہ وہ واـضح کریں کہ ہتک عزت معاملہ میں وہ جیٹلی سے پوچھ گچھ کرنا چاہتے ہیں یا نہیں ۔


غور طلب ہے کہ جیٹلی نے کیجریوال اور عام آدمی پارٹی کے پانچ لیڈران کے خلاف دسمبر 2015 میں ایک ہتک عزت کا مقدمہ درج کیا تھا ۔ ان لیڈران نے جیٹلی پر دہلی اور ضلع کرکٹ کے صدررہوتے ہوے غیر قانونی مالی بے ضابطگی کرنے کاالزام عاید کیا تھا جبکہ بی جے پی لیڈران نے تمام الزامات کی تردید کی تھی۔


جیٹلی کی جانب سے پیش ہوئے وکیل مانک ڈوگرا نے وشواس کی اس دلیل کو منظور کرنےسے منع کر دیا کہ انہوں نے اپنی پارٹی کے لیڈران کی ہی پیروکاری کی تھی ۔
جب جج نے وشواس سے پوچھا کہ کیا انہیں معافی مانگنے میں کوئی پریشانی ہے تو وشواس نے کہا کہ وہ جیٹلی کو ہوئے کسی بھی طرح کے نقصان کے لئے افسوس ظاہر کرتے ہیں ، لیکن معاملہ میں کیا بیان دینا ہے اس پر فیصلہ لینے کے لئے انہیں اور وقت کی ضرورت ہے ۔
First published: May 03, 2018 05:55 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading