உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اگستا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر بنانے والی کمپنی کے ساتھ سبھی دفاعی سودے ہوں گے رد : وزیر دفاع

    نئی دہلی : مرکز کی مودی حکومت نےبدعنوانیوں کے الزامات میں گھرے اگستا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر سودے سے متعلق ایک بڑا فیصلہ کیا ہے۔

    نئی دہلی : مرکز کی مودی حکومت نےبدعنوانیوں کے الزامات میں گھرے اگستا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر سودے سے متعلق ایک بڑا فیصلہ کیا ہے۔

    نئی دہلی : مرکز کی مودی حکومت نےبدعنوانیوں کے الزامات میں گھرے اگستا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر سودے سے متعلق ایک بڑا فیصلہ کیا ہے۔

    • PTI
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : مرکز کی مودی حکومت نےبدعنوانیوں کے الزامات میں گھرے اگستا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر سودے سے متعلق ایک بڑا فیصلہ کیا ہے۔ مودی حکومت نے ہیلی کاپٹر بنانے والی کمپنی فن میکانکاسے تمام قسم کے دفاعی سودوں کو رد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس بات کی اطلاع وزیر دفاع منوہر پاریکر نے اپنے ایک انٹرویو کے دوران دی ۔
      وزیر دفاع نے کہا کہ اگستا ویسٹ لینڈ کے علاوہ اس کے زیر کنٹرول دیگر سبھی کمپنیوں کو بھی بلیک لسٹ میں ڈالنے کی کارروائی شروع ہوگئی ہے اور وزارت قانون کا اس بابت ایک نوٹ بھیج دیا گیا ہے۔ وزیر دفاع نے کہا کہ جہاں کہیں بھی فن میکانکا اور اس کے زیر کنٹرول کمپنیوں کے ساتھ خریداری کا معاملہ وابستہ ہے سبھی طرح کے سودے رد کئے جائیں گے ۔ میں اس بات کو لے پوری طرح سے مطمئن ہوں۔
      تاہم انہوں نے اس بات کی بھی وضاحت کی کہ اس کمپنی کے ساتھ جو دفاعی سپلائی پہلے ہوچکی ہے ، اس سے متعلق سالانہ مینٹیننس اور پرزوں کو درآمد کرنے کا کام جاری رہے گا، صرف کوئی بھی نیا دفاعی سودہ نہیں کیا جائے گا۔
      قابل ذکر ہے کہ مرکزی حکومت پہلے ہی ڈبلیو ایس ایس کمپنی کے ساتھ اسکارپیو پن ڈبی کے لئے ہیوی ویٹ ٹارپیڈو کی خریداری کی تجویز سے متعلق ٹینڈر کو رد کرچکی ہے۔ اس سلسلہ میں کانگریس کی زیر قیادت یوپی اے حکومت کے دوران معاہدہ کیا گیا تھا۔ وزیر دفاع نے کہا کہ بلیک لسٹ کرنے کی کارروائی پہلے ہی شروع ہوچکی ہے اور اگر کسی مقررہ مدت تک بلیک لسٹ کرنے کا معاملہ ہوگا ، جس کے بارے میں نوٹس میں بتایا جائے گا تو اس مدت تک وزارت دفاع اس کمپنی کے ساتھ کوئی دفاعی خریداری نہیں کرے گی۔
      First published: