ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

وزیر اعلیٰ کیجریوال بولے۔ 31 جولائی تک 80 ہزار بیڈ کی ضرورت، اسپتالوں پر مانیں گے ایل جی اور مرکز کی بات

دلی کے اسپتالوں میں دلی والوں کا ہی علاج ہونے کی بات پر وزیر اعلیٰ کیجریوال نے کہا کہ وہ اس مسئلہ پر مرکزی حکومت اور لیفٹننٹ گورنر کی بات مانیں گے۔

  • Share this:
وزیر اعلیٰ کیجریوال بولے۔ 31 جولائی تک 80 ہزار بیڈ کی ضرورت، اسپتالوں پر مانیں گے ایل جی اور مرکز کی بات
وزیر اعلیٰ کیجریوال بولے۔ 31 جولائی تک 80 ہزار بیڈ کی ضرورت، اسپتالوں پر مانیں گے ایل جی اور مرکز کی بات

نئی دہلی۔ قومی دارالحکومت دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال (CM Arvind Kejriwal) نے کہا ہے کہ 31 جولائی تک کورونا مریضوں کے علاج کے لئے 80 ہزار بیڈ کی ضرورت ہو گی۔ انہوں نے بتایا کہ منگل کو ہوئی ایس ڈی ایم اے کی میٹنگ میں کورونا مریضوں کی ممکنہ تعداد پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس کے مطابق، 15 جون تک 44 ہزار، 30 جون تک ایک لاکھ اور 15 جولائی تک کورونا مریضوں کی تعداد 2.15 لاکھ تک پہنچ سکتی ہے۔ دلی کے اسپتالوں میں دلی والوں کا ہی علاج ہونے کی بات پر وزیر اعلیٰ کیجریوال نے کہا کہ وہ اس مسئلہ پر مرکزی حکومت اور لیفٹننٹ گورنر کی بات مانیں گے۔ یہ آپس میں لڑنے کا وقت نہیں ہے، بلکہ مل کر کورونا سے لڑنے کا وقت ہے۔ وزیر اعلیٰ نے عام لوگوں کو صلاح دی کہ وہ گھر سے باہر نکلتے وقت ماسک ضرور استعمال کریں۔ ساتھ ہی سوشل ڈسٹینسنگ پر عمل کریں اور ہاتھ کو سینیٹائز کریں۔



وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پچھلے آٹھ دنوں میں 1900 کورونا پازیٹیو اسپتال پہنچے ہیں۔ مختلف اسپتالوں میں ابھی بھی 4200 بیڈ خالی ہیں۔ وزیر اعلیٰ نے بتایا کہ 50 فیصد تک مریض باہر سے آتے ہیں۔ ایسے میں ہمارے اندازے کے مطابق، جولائی تک ہمیں ڈیڑھ لاکھ بیڈ کی ضرورت پڑے گی۔ ساتھ ہی انہوں نے بتایا کہ اسٹیڈیم کو کوارنٹین سینٹر میں تبدیل کرنے کے عمل کی نگرانی وہ خود کریں گے۔

آپ کو بتا دیں کہ وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال کا کل کورونا سیمپل ٹیسٹ ہوا تھا جس میں انہیں COVID-19 منفی پایا گیا ہے۔ ان کی غیر موجودگی میں دہلی کے نائب وزیر اعلیٰ منیش سسودیا ایس ڈی ایم اے کی میٹنگ میں شامل ہوئے تھے۔ سسودیا نے میٹنگ کے بعد دہلی میں کورونا کے معاملوں کا تخمینہ پیش کرتے ہوئے کہا تھا کہ اکتیس جولائی تک راجدھانی میں کورونا کے پانچ لاکھ سے زیادہ مریض ہو سکتے ہیں جن کے لئے بڑی تعداد میں اسپتالوں میں بیڈ کی ضرورت ہو گی۔
First published: Jun 10, 2020 01:35 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading