ہوم » نیوز » No Category

لیفٹیننٹ گورنر کے نوٹس پر دہلی حکومت مرکزی وزارت داخلہ سے بات کرے گی

نئی دہلی: دہلی کابینہ نے آج فیصلہ کیا ہے کہ وہ مرکزی وزارت داخلہ سے اس سلسلے میں مشورہ طلب کرے گي کہ کیا جمہوری طریقے سے منتخب حکومت کو لیفٹیننٹ گورنر اس طرح سے نوٹس جاری کر سکتے ہیں؟۔

  • UNI
  • Last Updated: Sep 22, 2015 12:07 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
لیفٹیننٹ گورنر کے نوٹس پر دہلی حکومت مرکزی وزارت داخلہ سے بات کرے گی
نئی دہلی: دہلی کابینہ نے آج فیصلہ کیا ہے کہ وہ مرکزی وزارت داخلہ سے اس سلسلے میں مشورہ طلب کرے گي کہ کیا جمہوری طریقے سے منتخب حکومت کو لیفٹیننٹ گورنر اس طرح سے نوٹس جاری کر سکتے ہیں؟۔

نئی دہلی: دہلی کابینہ نے آج فیصلہ کیا ہے کہ وہ مرکزی وزارت داخلہ سے اس سلسلے میں مشورہ طلب کرے گي کہ کیا جمہوری طریقے سے منتخب حکومت کو لیفٹیننٹ گورنر اس طرح سے نوٹس جاری کر سکتے ہیں؟۔


وزیر اعلی اروند کیجریوال کی صدارت میں آج ہو نے والی کابینہ میٹنگ میں یہ فیصلہ کیا گیا۔ میٹنگ میں یہ طے کیا گیا کہ دہلی حکومت مرکزی وزارت داخلہ سے یہ دریافت کرے گي کہ لیفٹننٹ گورنر کس قانون کے تحت دہلی حکومت کے حکام کو براہ راست ہدایات جاری کرتے ہیں اور کس قانون کے تحت وہ دہلی حکومت کو ہدایات دے سکتے ہیں۔


اجلاس میں یہ فیصلہ بھی کیا گیا کہ وزارت داخلہ سے یہ بھی پوچھا جائے گا کہ کن اختیارات کے تحت دہلی کی منتخب حکومت کی طرف سے جاری احکامات کو غیر قانونی ٹھہرانے کے لئے لیفنٹننٹ نوٹیفکیشن جاری کرتے ہیں؟۔


اس کے علاوہ میٹنگ میں گورنرہاؤس کی طرف سے گزشتہ ہفتے موصول ہونے والے نوٹس کے بعد دہلی حکومت کی کابینہ نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ وزارت داخلہ سے درخواست کرے گی کہ وہ دہلی و انڈمان نیکوبار جزائر( دانکس) کے حکام کے گریڈ میں ترمیم کے لئے فوری طورپر حتمی فیصلہ کریں کیونکہ یہ معاملہ گزشتہ ایک دہائی سے زیر التواء ہے۔


سی این جی فٹنیس گھوٹالے میں انکوائری کمیشن کے معاملے پر کابینہ نے پایا کہ وہ پہلے سے ہی دہلی ہائی کورٹ کے سامنے زیر التواء ہے اور اس سے منسلک تمام فریقوں کو قانون کا احترام کرنا چاہئے۔

First published: Sep 22, 2015 12:07 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading