உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی ہائی کورٹ نے لگائی پھٹکار ، کہا : دہلی کے ساتھ سوتیلا برتاؤ کررہی ہے مودی سرکار

    نئی دہلی : خواتین کی سیکورٹی کو لے کر دہلی ہائی کورٹ نے آج مرکزی حکومت کو زبردست پھٹکار لگائی ہے ۔ ہائی کورٹ نے کہا کہ دہلی میں خواتین کی سیکورٹی کو لے کر حکومت سنجیدہ نہیں ہے۔ ہائی کورٹ نے یہ بات نربھیا گینگ ریپ کے بعد خواتین کی دہلی میں سیکورٹی کو لے کر دائر ایک درخواست کی سماعت کرتے ہوئے کہی۔

    نئی دہلی : خواتین کی سیکورٹی کو لے کر دہلی ہائی کورٹ نے آج مرکزی حکومت کو زبردست پھٹکار لگائی ہے ۔ ہائی کورٹ نے کہا کہ دہلی میں خواتین کی سیکورٹی کو لے کر حکومت سنجیدہ نہیں ہے۔ ہائی کورٹ نے یہ بات نربھیا گینگ ریپ کے بعد خواتین کی دہلی میں سیکورٹی کو لے کر دائر ایک درخواست کی سماعت کرتے ہوئے کہی۔

    • News18
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی : خواتین کی سیکورٹی کو لے کر دہلی ہائی کورٹ نے آج مرکزی حکومت کو زبردست پھٹکار لگائی ہے ۔ ہائی کورٹ نے کہا کہ دہلی میں خواتین کی سیکورٹی کو لے کر حکومت سنجیدہ نہیں ہے۔ ہائی کورٹ نے یہ بات نربھیا گینگ ریپ کے بعد خواتین کی دہلی میں سیکورٹی کو لے کر دائر ایک درخواست کی سماعت کرتے ہوئے کہی۔


      ہائی کورٹ نے کہا کہ مرکزی حکومت دہلی میں نہ تو سی سی ٹی وی لگوانے کی رقم خرچ کرنا چاہتی ہے اور نہ ہی اس کی دلچسپی پولیس کی نئی بھرتی میں ہے۔ دہلی میں ہی تمام لیڈروں کے بیٹھنے کے بعد بھی مرکزی حکومت دہلی کے ساتھ سوتیلا برتاؤ کر رہی ہے۔ دہلی کے لوگوں اور خواتین کی سیکورٹی کی مرکزی حکومت کو فکر نہیں ہے۔


      ہائی کورٹ نے سخت لہجے میں تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ دہلی میں آج بھی 7 بجے کے بعد خواتین محفوظ نہیں ہیں۔ وزارت داخلہ دہلی پولیس میں 14 ہزار مزید بھرتیوں کو منظوری دے چکی ہے ، لیکن اخراجات محکمہ نے یہ کہہ کر اس پر روک لگادیا کہ حکومت کے پاس اتنا پیسہ خرچ کرنے کے لئے نہیں ہے۔ کورٹ نے کہا کہ ایسا کیسے ہو سکتا ہے کہ دوسرا محکمہ وزارت داخلہ کی منظوری کے بعد بھی بھرتی پر روک لگا دے۔


      ادھر ہائی کورٹ نے دہلی پولیس اور دہلی حکومت سے خواتین کی سیکورٹی کو لے کر ان احکام کے بارے میں بتانے کو بھی کہا ، جن کو ابھی تک مرکزی حکومت نے فالو نہیں کیا ہے۔ معاملے کی اگلی سماعت 27 جنوری کو ہوگی۔

      First published: