உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    آکسیجن سپلائی پر دہلی ہائی کورٹ مرکز سے ناراض ، پوچھا : کیوں نہ چلائیں توہین عدالت کا معاملہ

    آکسیجن سپلائی پر دہلی ہائی کورٹ مرکز سے ناراض ، پوچھا : کیوں نہ چلائیں توہین کا معاملہ

    آکسیجن سپلائی پر دہلی ہائی کورٹ مرکز سے ناراض ، پوچھا : کیوں نہ چلائیں توہین کا معاملہ

    مرکزی حکومت کو ہائی کورٹ نے یہ بتانے کی ہدایت دی ہے کہ ہائی کورٹ کے یکم مئی کے حکم پر عمل کیوں نہیں کیا گیا اور ان کے خلاف توہین عدالت کا معاملہ کیوں نہیں چلایا جائے ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : دہلی میں کورونا وائرس کے حالات ، آکسیجن اور بیڈ کی کمی پر ایک مرتبہ پھر ہائی کورٹ نے مرکزی حکومت پر ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے مرکزی حکومت کو نوٹس جاری کیا ہے ۔ مرکزی حکومت کو ہائی کورٹ نے یہ بتانے کی ہدایت دی ہے کہ ہائی کورٹ کے یکم مئی کے حکم پر عمل کیوں نہیں کیا گیا اور ان کے خلاف توہین عدالت کا معاملہ کیوں نہیں چلایا جائے ۔ یہی نہیں ، ہائی کورٹ نے مرکزی حکومت کے دو بڑے افسر پیوش گوئل اور سمیتا ڈابرا کو ہائی کورٹ میں پیش ہرنے کا حکم دیا ہے ۔

      ویسے سماعت کے دوران ہائی کورٹ نے کہا کہ 30 اپریل کو سپریم کورٹ نے مرکز کو دہلی کو 700 میٹرک ٹن آکسیجن دینے کی ہدایت دی تھی ، 490 نہیں ۔ پھر یہ دہلی کو نہیں دیا گیا ۔ آپ کو بتادیں کہ یکم مئی کو دہلی ہائی کورٹ نے مرکزی حکومت کو حکم دیا تھا کہ کسی بھی صورت میں یکم مئی کو ہی 490 میٹرک ٹن آکسیجن دہلی کو دیا جائے ۔ ہائی کورٹ نے کہا تھا کہ لوگ آکسیجن کیلئے رو رہے ہیں ۔ اسپتالوں میں آکسیجن نہیں ہے ، اس بابت دہلی کو 490 میٹرک ٹن کی ضرورت ہے اور اس کو مرکزی حکومت پورا کرے ۔

      سماعت کے دوران کئی مرتبہ دہلی ہائی کورٹ نے مرکزی حکومت کو پھٹکار لگائی اور کہا کہ لوگ مرر ہے ہیں اور آپ کہتے ہیں کہ جذباتی ہوکر نہ دیکھیں ۔ آپ اس پر اندھے ہوسکتے ہیں ہم اپنی آنکھیں بند نہیں کرسکتے ۔ یہ افسوسناک ہے کہ دہلی میں آکسیجن کے فقدان میں لوگوں کی جانیں تلف ہورہی ہیں ۔

      دہلی اور اس کے اردگرد  پانچ آکسیجن پلانٹ لگائے گی ڈی آر ڈی  او

      ادھر دفاعی ریسرچ اینڈ ڈیولپمنٹ آرگنائزیشن (ڈی آر ڈی او) رواں ہفتے دارالحکومت دہلی اور ملحقہ علاقوں میں پانچ طبی آکسیجن پلانٹ لگائے گی۔ یہ پلانٹس ایمس ٹراما سنٹر ، ڈاکٹر رام منوہر لوہیا اسپتال ، صفدرجنگ اسپتال ، لیڈی ہارڈنگ میڈیکل کالج اور جھجر میں ایمس میں لگائے جائیں گے۔ اس کے لئے رقم وزیر اعظم کیئرس فنڈ سے جاری کی جائے گی ۔ حال ہی میں اس فنڈ سے 500 آکسیجن پلانٹس لگانے کا اعلان کیا گیا تھا۔

      ان میں سے دو پلانٹ آج دارالحکومت پہنچ گئے اور انہیں ایمس ٹراما سنٹر اور رام منوہر لوہیا اسپتال میں قائم کیا جارہا ہے۔ ان پلانٹس کی فراہمی اور ان کیلئے جگہ کی شناخت پر مسلسل نگرانی کی جارہی ہے۔ یہ پلانٹ 1000 لیٹر فی منٹ کی شرح سے آکسیجن پیدا کرسکتے ہیں۔ اس کی مدد سے آکسیجن 190 مریضوں کو پانچ لیٹر فی منٹ کی شرح سے دیا جاسکتا ہے اور وہ ہر روز 195 سلنڈر بھرے جا سکتے ہیں۔ ان پلانٹس میں استعمال ہونے والی ٹیکنالوجی کو ڈی آر ڈی او نے دیسی ساختہ ہلکے جنگی طیارے تیجس کے لئے تیار کیا تھا۔

      یو ای آئی کے ان پٹ کے ساتھ ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: