உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی ہائی کورٹ نے کیجریوال حکومت کی راشن ڈور اسٹیپ ڈیلیوری اسکیم کو دی ہری جھنڈی

    دہلی ہائی کورٹ نے کیجریوال حکومت کی راشن ڈور اسٹیپ ڈیلیوری اسکیم کو دی ہری جھنڈی

    دہلی ہائی کورٹ نے کیجریوال حکومت کی راشن ڈور اسٹیپ ڈیلیوری اسکیم کو دی ہری جھنڈی

    مرکزی حکومت اور ایل جی کو بڑا جھٹکا لگا ہے ۔ دہلی ہائی کورٹ نے کیجریوال حکومت کی راشن کی ڈور اسٹیپ ڈیلیوری اسکیم کو ہری جھنڈی دکھا دی ہے ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
    نئی دہلی : مرکزی حکومت اور ایل جی کو بڑا جھٹکا لگا ہے ۔ دہلی ہائی کورٹ نے کیجریوال حکومت کی راشن کی ڈور اسٹیپ ڈیلیوری اسکیم کو ہری جھنڈی دکھا دی ہے ۔ موسٹ اویٹیڈ اسکیم ہونے کے باوجود مرکزی حکومت نے شروع ہونے سے ایک ہفتہ قبل ایل جی کے ذریعہ اس راشن کی تقسیم کی اسکیم پر روک لگوادی تھی ۔ دہلی ہائی کورٹ کا یہ حکم اس وقت آیا جب دہلی کے بیشتر لوگوں نے اپنی دہلیز پر راشن کی فراہمی کا انتخاب کیا ۔ عدالت نے یہ فیصلہ دہلی حکومت کی راشن تقسیم اسکیم کے خلاف دہلی کی گورنمنٹ راشن ڈیلرز ایسوسی ایشن کے عدالت میں جانے پر دہلی حکومت کے منصوبے کے حق میں دیا ہے۔ دہلی حکومت کے وکیل نے اس بات پر زور دیا کہ کس طرح اسکیم کو لوگوں کی بھاری اکثریت نے پسند کیا اور عدالت کے سابقہ ​​حکم کا اسکیم کی خدمات کو روکنے سے کوئی تعلق نہیں ہے ۔

    عدالت نے دہلی حکومت کے وکیل کی اس بات کا بھی نوٹس لیا کہ عدالت نے اس سے پہلے گھر گھر راشن پہنچانے کی اسکیم کے نفاذ پر روک نہیں لگائی تھی۔ عدالت نے اس حقیقت کا بھی نوٹس لیا کہ لوگوں کی ایک بڑی تعداد راشن کی ہوم ڈیلیوری چاہتی ہے۔ دہلی حکومت نے پبلک ڈسٹری بیوشن سسٹم کارڈ ہولڈرز سے یہ پوچھنے کی مشق شروع کی تھی کہ کیا وہ موجودہ پی ڈی ایس کی دکانوں سے اپنا راشن لینے کے موجودہ نظام کو جاری رکھنا پسند کرتے ہیں یا ان کی دہلیز پر راشن لینا چاہتے ہیں۔

    دہلی ہائی کورٹ نے راشن کی ڈور اسٹیپ ڈیلیوری کی اجازت دی ہے ، کیونکہ زیادہ تر مستحقین نے اپنی دہلیز پر راشن کی فراہمی کا انتخاب کیا ہے۔ عدالت نے وکیل کی اس دلیل کا نوٹس لیا کہ زیادہ تر مستحقین نے ان کی دہلیز پر راشن کی فراہمی کا انتخاب کیا ہے اور دہلی حکومت بھی فائدہ اٹھانے والوں کو ایک آپشن دے گی اگر وہ چاہیں۔

    امید کی جارہی ہے کہ دہلی حکومت کی راشن ہوم ڈلیوری اسکیم تبدیلی لائے گی اور اس سے راشن چوری اور راشن مافیا سنڈیکیٹ کے ذریعہ غریبوں پر ظلم کو روکنے میں مدد ملے گی ۔ تاہم اس اسکیم کے آغاز سے ایک ہفتہ قبل مرکزی حکومت نے ایل جی کے ذریعے اسے مسترد کر دیا تھا۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: