உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Delhi Violence:پانچ ملزمین انصار، سلیم، سونو، دلشاد اور آہیر پر لگا NSA، اب تک 26گرفتار، جانیے بڑی باتیں

    دہلی کے جہانگیرپوری علاقے میں کشال چوک کے قریب سڑکوں پر منگل کو کچھ معمول کی سرگرمیاں دوبارہ شروع ہوئیں، لیکن تشدد سے متاثرہ علاقے میں کشیدگی برقرار رہی۔ زیادہ تر دکانیں مسلسل چوتھے روز بھی بند رہیں۔

    دہلی کے جہانگیرپوری علاقے میں کشال چوک کے قریب سڑکوں پر منگل کو کچھ معمول کی سرگرمیاں دوبارہ شروع ہوئیں، لیکن تشدد سے متاثرہ علاقے میں کشیدگی برقرار رہی۔ زیادہ تر دکانیں مسلسل چوتھے روز بھی بند رہیں۔

    دہلی کے جہانگیرپوری علاقے میں کشال چوک کے قریب سڑکوں پر منگل کو کچھ معمول کی سرگرمیاں دوبارہ شروع ہوئیں، لیکن تشدد سے متاثرہ علاقے میں کشیدگی برقرار رہی۔ زیادہ تر دکانیں مسلسل چوتھے روز بھی بند رہیں۔

    • Share this:
      نئی دہلی: ہنومان جینتی کے موقع پر دہلی کے جہانگیر پوری میں تشدد پھوٹ پڑا۔ جلوس کے دوران بھڑکنے والے تشدد میں پولیس اب ملزمین کے خلاف کارروائی کر رہی ہے۔ اب اس معاملے سے متعلق پانچ اہم ملزمان پر این ایس اے لگا دیا گیا ہے۔ اس کے ساتھ پولیس نے کچھ نئی گرفتاریاں بھی کی ہیں۔ اس معاملے پر سیاست بھی تیز ہوگئی ہے۔ آئیے جانتے ہیں دہلی تشدد سے متعلق تازہ اپ ڈیٹ۔

      اب تک 26 لوگ گرفتار
      دہلی پولیس کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ تحقیقات ابتدائی مراحل میں ہے اور فی الحال شناخت کے بعد ملزمان کو گرفتار کیا جا رہا ہے۔ پولیس نے اب اس شخص کو بھی گرفتار کر لیا ہے جس نے ایک ملزم کو پستول دیا تھا۔ گرفتار شخص کا نام گُللی ہے جس نے ملزم سونو چکنا کو اسلحہ فراہم کیا تھا۔ پولیس نے اب تک کل 26 افراد کو گرفتار کیا ہے جن میں کچھ نابالغ بھی شامل ہیں۔ مستقبل میں اس تشدد کے سلسلے میں کچھ اور گرفتاریاں بھی ہوسکتی ہیں۔ پولیس افسران کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ اسلحہ رکھنے والے تمام ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ سب سے پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      نعرہ تکبیر چلانے سے کچھ نہیں ہوگا... دارالعلوم دیوبند کے مہتمم کی مسلمانوں سے بڑی اپیل

      5 ملزمین کے خلاف NSA
      وزارت داخلہ نے دہلی تشدد کے پانچ ملزمان کے خلاف قومی سلامتی ایکٹ کے تحت کارروائی کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ مرکزی ملزم انصار کے علاوہ ملزم سلیم، امام شیخ عرف سونو، دلشاد اور آہیر کے نام شامل ہیں۔ اس سے قبل مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے دہلی پولیس کمشنر کو سخت ہدایات جاری کی تھیں۔ انہوں نے کہا تھا کہ جو لوگ اس تشدد کے ذمہ دار ہیں ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے، ساتھ ہی ایسی سخت کارروائی کی جائے کہ کوئی دوبارہ تشدد کرنے کا نہ سوچے۔ اس کے علاوہ امت شاہ نے جانچ میں تیزی لانے کی بھی بات کی تھی۔

      یہ بھی پڑھیں:
      کھرگون تشدد میں Police کے جبر کی داستان، دونوں ہاتھوں سے معذور وسیم شیخ کوبتادیا ‘دنگائی‘

      جہانگیرپوری علاقے میں فی الحال امن برقرار
      دہلی کے جہانگیرپوری علاقے میں کشال چوک کے قریب سڑکوں پر منگل کو کچھ معمول کی سرگرمیاں دوبارہ شروع ہوئیں، لیکن تشدد سے متاثرہ علاقے میں کشیدگی برقرار رہی۔ زیادہ تر دکانیں مسلسل چوتھے روز بھی بند رہیں تاہم کشال چوک کے قریب سڑکوں پر کچھ سبزی اور پھلوں کے ٹھیلے نظر آئے۔ لوگ سبزی اور کریانہ خریدتے نظر آئے۔ مقامی لوگوں کے مطابق گزشتہ روز کی نسبت صورتحال میں بہتری آئی ہے۔ تاہم عام زندگی بدستور متاثر ہے اور علاقے میں بڑی تعداد میں سیکورٹی اہلکار تعینات ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: