உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی: شاہین باغ میں آج چل سکتا ہے بلڈوزر، تجاوزات پر ہوگی MCD  کی بڑی کارروائی

    Youtube Video

    Bulldozer action in Shaheen bagh: ساؤتھ ایم سی ڈی کے ایکشن پلان کے مطابق غیر قانونی تجاوزات کے خلاف کارروائی کی جائے گی اور شاہین باغ جی بلاک سے جسولا اور جسولا نالہ سے کالندی کنج پارک تک تجاوزات ہٹائی جائیں گی۔

    • Share this:
      Bulldozer action in Shaheen bagh: دہلی میں غیر قانونی تعمیرات اور قبضوں کے خلاف میونسپل کارپوریشن کی کارروائی جاری ہے۔ دہلی کے شاہین باغ میں آج یعنی 9 مئی کو بلڈوزر چلنے کا امکان ہے۔ جنوبی دہلی کے کئی حصوں میں میونسپل کارپوریشن کے پہلے مرحلے کی یہ کارروائی 4 مئی سے 13 مئی تک جاری رہے گی۔ ساؤتھ ایم سی ڈی MCD نے انسداد تجاوزات مہم کے پہلے دن ایم بی روڈ اور کرنی سنگھ شوٹنگ رینج کے علاقوں میں بلڈوزر چلوائے تھے۔ ساؤتھ اور ساؤتھ ایسٹ کے ڈی سی پیز کو لکھے گئے خط میں کہا گیا ہے کہ 9 مئی کو شاہین باغ علاقے میں بلڈوزر چلے گا۔ کارپوریشن نے اس کے لیے پولیس سے کافی نفری کی بھی مانگ کی ہے۔

      ساؤتھ ایم سی ڈی کے ایکشن پلان کے مطابق غیر قانونی تجاوزات کے خلاف کارروائی کی جائے گی اور شاہین باغ جی بلاک سے جسولا اور جسولا نالہ سے کالندی کنج پارک تک تجاوزات ہٹائی جائیں گی۔ بتا دیں کہ اس سے پہلے دہلی کے جہانگیر پوری اور تغلق آباد میں تجاوزات ہٹانے کے بعد جمعرات 5 مئی کو شاہین باغ کے علاقوں میں بلڈوزر چلایا جانا تھا، کارپوریشن کے افسران اور بلڈوزر بھی موقع پر پہنچ گئے تھے لیکن پولیس کی موجودگی نہیں تھی جس کی وجہ سے مہم کو ملتوی کرنا پڑا تھا۔

      دہلی کے جہانگیر پوری سے شروع ہونے والی غیر مجاز قبضوں کو ہٹانے کی کارروائی اب پوری دہلی میں نظر آرہی ہے۔ جنوبی دہلی میونسپل کارپوریشن (SDMC) نے انسداد تجاوزات مہم شروع کی ہے، جو 13 مئی تک جاری رہے گی۔ جمعرات کو کالندی کنج پارک سے جامعہ نگر پولس اسٹیشن تک تجاوزات کے خلاف میونسپل کارپوریشن کی کارروائی طے پائی۔

      جس کے تحت ایس ڈی ایم سی کی جانب سے غیر قانونی تجاوزات کو ہٹانا تھا، لیکن دہلی پولیس کی جانب سے پولیس فورس فراہم نہیں کی گئی، جس کی وجہ سے تجاوزات ہٹانے کی کارروائی نہیں ہوسکی۔ ایسے میں عام لوگوں نے خود ہی اپنی دکانوں کا سامان دکانوں کی مقررہ دائرے میں کر لیا ہے۔

      یہ بھی پڑھئے: اپنے ولیمے پر دلہن کے لباس میں چہرے کو حجاب سے ڈھکے نظر آئیں AR RAHMAN کی بیٹی خدیجہ رحمان

      کچی آبادیوں کو مسمار کرنے کا منصوبہ 

      دریں اثنا، کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا مارکسسٹ (سی پی ایم) نے جنوبی دہلی کے شاہین باغ میں غیر قانونی طور پر تعمیر شدہ بستیوں کو ہٹانے کے حکم کے خلاف سپریم کورٹ میں عرضی داخل کی ہے۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ حکام نے کچی آبادیوں کو مسمار کرنے کا منصوبہ بنالیا ہے اور آئندہ ہفتے اس پر عمل درآمد ہونے جارہا ہے۔ عرضی میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ رواں ہفتے 4 مئی کو سنگم وہار میں غریبوں کی عمارتوں پر بلڈوزر چلائے گئے تھے۔ اب پیر تک اوکھلا شاہین باغ میں بھی ایسا ہی کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔

      یہاں رہنے والے لوگوں کا کہنا ہے کہ پہلے یہ سامان سڑکوں پر پھیلا ہوا نظر آتا تھا لیکن اب ممکنہ کارروائی کے خوف سے دکانیں اپنی مقررہ حدود میں واپس آ گئی ہیں۔ نتیجہ یہ ہے کہ اب سڑکیں چوڑی نظر آنے لگی ہیں جس کی وجہ سے جام کا امکان کم نظر آرہا ہے۔

      ایم سی ڈی نے مانگی تھی پولیس فورس؟
      ایم سی ڈی کے سینٹرل زون کے چیئرمین راجپال سنگھ کا کہنا ہے کہ کسی بھی مخالف مہم کو چلانے کے لیے پولیس فورس کا ہونا بہت ضروری ہے۔ تجاوزات کے خلاف مہم پولیس فورس کی حفاظت کے بغیر کامیابی سے نہیں چل سکتی۔ انہوں نے بتایا کہ اس سے قبل اوکھلا ایسٹ میں ایم ایل اے رہے لوگوں نے ہمارے ملازمین کے ساتھ بدتمیزی کی تھی، اس لیے ہم نے اپنے ملازمین کی حفاظت کے پیش نظر پولیس فورس کا مطالبہ کیا تھا۔

      Varanasi Gyanvapi Mosque Case : گیان واپی مسجد کو لے کر بڑھا تنازعہ
      کیا ایم سی ڈی نے لوگوں کو پہلے سے دی ہے نوٹس؟
      اس سوال کا جواب دیتے ہوئے سنگھ کا کہنا ہے کہ تجاوزات کرنے والوں کو کسی قسم کے نوٹس کی ضرورت نہیں ہے۔ ان کے ذہن میں یہ احساس ہے کہ ہم نے قبضہ کر لیا ہے اور وہ خود ہی تجاوزات ہٹاتے ہیں، ہم اس کی نگرانی کریں گے، ویڈیو گرافی کریں گے تاکہ دوبارہ تجاوزات نہ ہوں۔

      آنے والے دنوں میں، ایم سی ڈی نے سرینواس پوری کالونی سے لے کر اوکھلا، شاہین باغ سے جسولا اور کالندی کنج پارک، دھیرسن مارگ، اسکون مندر سے کالکی دیوی مندر وغیرہ کے علاقوں میں تجاوزات کے خلاف کارروائی کرنے کا منصوبہ بنایا ہے۔ تجاوزات کے خلاف چلائی جارہی مہم کے ذریعے امید کی جارہی ہے کہ دہلی میں سڑکوں پر کم جام ہوگا۔ اس سے لوگوں کو پارکنگ کی سہولت بھی میسر آئے گی اور وہاں کے مکینوں کا قیمتی وقت بھی بچ جائے گا۔

       
      Published by:Sana Naeem
      First published: