ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جامعہ تشدد معاملہ: پولیس نے پوچھ گچھ کے لئے 10 طلبہ کو کیا طلب

ایک سینئر پولیس آفیسر نے بتایا کہ دہلی پولیس کی کرائم برانچ کی ایک ٹیم بدھ کو یونیورسیٹی کیمپس پہنچی اور طلبہ کو نوٹس تھمائے۔

  • Share this:
جامعہ تشدد معاملہ: پولیس نے پوچھ گچھ کے لئے 10 طلبہ کو کیا طلب
جامعہ تشدد : فائل فوٹو

نئی دہلی۔ 15 دسمبر کو ہوئے جامعہ تشدد معاملہ میں دہلی پولیس کی کرائم برانچ نے 10 طلبہ کو نوٹس بھیج کر جمعرات کو پوچھ گچھ کے لئے طلب کیا ہے۔ ایک سینئر پولیس آفیسر نے بتایا کہ دہلی پولیس کی کرائم برانچ کی ایک ٹیم بدھ کو یونیورسیٹی کیمپس پہنچی اور طلبہ کو نوٹس تھمائے۔ جن طلبہ کو پوچھ گچھ کے لئے بلایا گیا ہے ان میں کچھ ایسے بھی طلبہ ہیں جنہیں واقعہ کی رات حراست میں لیا گیا تھا۔ ان میں سے کچھ کی پہچان حال ہی میں سامنے آئے سی سی ٹی وی کے ویڈیو کلپس کے ذریعہ کی گئی ہے۔ کچھ ایسے طلبہ بھی ہیں جو واقعہ کے دن زخمی ہوئے تھے۔


جامعہ تشدد: فائل فوٹو
جامعہ تشدد: فائل فوٹو


پولیس ڈپٹی کمشنر (جرائم) راجیش دیو کی قیادت میں کرائم برانچ کی ٹیم کے کچھ ارکان نے منگل کو پہلی بار کیمپس کا دورہ کیا۔ ٹیم کے ارکان نے ایک طالب علم محمد منہاج الدین سے بھی بات کی تھی۔ بتا دیں کہ پولیس کی کارروائی میں منہاج الدین کی ایک آنکھ کی روشنی چلی گئی تھی۔


یہ تھا پورا معاملہ

بتا دیں کہ شہریت ترمیمی قانون 2019 پاس ہونے کے فورا بعد جامعہ ملیہ اسلامیہ کے طلبہ نے اس کی مخالفت میں احتجاج کیا۔ مخالفت میں نکالا گیا مارچ جلد ہی پرتشدد احتجاج میں تبدیل ہو گیا۔ اس کے بعد دلی پولیس نے طلبہ پر جم کر لاٹھی چلائی۔ پولیس نے لائبریری میں بیٹھے طلبہ کے ساتھ بربریت کی۔ لائبریری میں گھس کر اس نے توڑ پھوڑ کی اور طلبہ کی جم کر پٹائی کی۔ حالانکہ پولیس نے اپنی صفائی میں کہا کہ طلبہ پر ہلکی طاقت کا استعمال کیا گیا تھا۔

First published: Feb 20, 2020 01:23 PM IST