உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    شبِ براءت پر شاہی امام احمد بخاری کی مسلمانوں سے اپیل، محلوں کی مسجدوں یا گھروں میں ہی عبادت کا اہتمام کریں

    Youtube Video

    دہلی کی جامع مسجد کے شاہی امام احمد بخاری Syed Ahmad Bukhari نے فرزندان توحید سے اپیل کی ہے کہ وہ شب برات کے موقع پر گھروں میں عبادتوں کا اہتمام کریں۔ یا پھر محلوں کی مسجدوں میں شب بیداری کریں۔

    • Share this:
      دہلی کی جامع مسجد کے شاہی امام احمد بخاری نے فرزندان توحید سے اپیل کی ہے کہ وہ شب برات  (Shab e Barat 2021) کے موقع پر گھروں میں عبادتوں کا اہتمام کریں یا پھر محلوں کی مسجدوں میں شب بیداری کریں۔ وہیں احمد بخاری نے سڑکوں پر بھیڑ اکٹھا کرنے سے بھی گریز کرنے کی اپیل کی ہے۔ واضح ہو کہ کل شب برات ہے۔ اس موقع پر مسلمان شب بیداری کرتے ہیں اور خاص عبادتوں کا اہتمام کیاجاتاہے۔  شب معراج و شب برات میں تمام مسلمان اپنے اپنے حلقوں میں مساجد، عبادت گاہوں اور خانقاہوں میں حاضری دے کر عبادت کرتے ہیں اور شب معراج اور شب برات میں رات بھر عبادت میں مشغول رہتے ہیں جس کی وجہ سے مساجد اور قبرستانوں میں بھیڑ بھاڑ ہوتی ہے۔ اس لئے اس سال شب معراج و شب برات پر بھیڑ بھاڑ کے جمع ہونے پر بھی گریز کرنے اپیل کی ہے۔

      وہیں شب معراج اور شب برات کے پیش نظر عوامی تقریبات پر مہاراشٹرحکومت نے وقتی پابندی عائد کر دی ہے۔ کیونکہ ریاست میں کورونا وبا میں تیزی سے اضافہ ہوا ہے، اس کے پس منظر میں حکومت مہاراشٹر نے شب معراج اور شب برات کے لئے گائڈ لائن مرتب کی ہیں۔ اس سال شب معراج و شب برات پر بھیڑ بھاڑ کے جمع ہونے پر حکومت مہاراشٹر نے بھی پابندی عائد کردی ہے اور مقررہ حد میں ہی مساجد اور قبرستانوں میں عبادت وریاضت کی اجازت دی ہے۔ 11 مارچ کی شب سے 12 مارچ کی صبح تک کسی بھی قسم کے جلسے جلوس اور عوامی تقریبات پر پابندی عائد رہے گی۔ اسی طرح 28 مارچ شب برات میں بھی کسی بھی قسم کی بھیڑ بھاڑ کرنے پر پابندی عائد رہے گی۔

      واضح رہے کہ کورونا کے پھیلاؤ کے خطرات پرقابو پایا جاسکے۔ شب معراج و شب برات کے پیش نظر مساجد میں نمازیوں کو عبادت کی اجازت رہے گی، لیکن مرحلہ وار 40 سے 50 نمازیوں کو ہی جسمانی فاصلہ بر قرار رکھ کر مساجد اور قبرستانوں اور مذہبی مقامات میں جانے کی اور عبادت کرنے کی اجازت ہوگی۔ اس کے ساتھ ہی ماسک لگانا اور فاصلہ قائم رکھنا لازمی ہوگا۔ مساجد اور اس کے اطراف میں دکانوں اور دیگر کاروبار اور بازاری مصروفیات کے دوران جسمانی فاصلہ اور کورونا وبا کے اصول و ضوابط کی پابندی لازمی قراردی گئی ہے۔

      دنیا بھرمیں کورونا وائرس کے سبب میں بارہ کروڑ چون لاکھ چوبیس ہزار سے زائد افراد ہوچکے ہیں متاثر ۔ وہیں ستائیس لاکھ چھپن ہزار چھ سو باسٹھ افراد ہوچکے ہیں ہلاک ۔جبکہ صحت یاب ہونے والوں کی تعداد دس کروڑ بارہ لاکھ اٹھاسی ہزار سے زائد بتائی گئی۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: