உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی یونیورسٹی میں رام مندر کی تعمیر معاملہ پر سیمینار کا انعقاد، این ایس یو آئی کی زبردست مخالفت

    نئی دہلی۔ جب سے مرکز میں وزیراعظم نریندر مودی کی زیر قیادت بی جے پی برسر اقتدار آئی ہے، فرقہ پرستوں کی فرقہ پرستی مزید بڑھتی ہی جا رہی ہے۔

    نئی دہلی۔ جب سے مرکز میں وزیراعظم نریندر مودی کی زیر قیادت بی جے پی برسر اقتدار آئی ہے، فرقہ پرستوں کی فرقہ پرستی مزید بڑھتی ہی جا رہی ہے۔

    نئی دہلی۔ جب سے مرکز میں وزیراعظم نریندر مودی کی زیر قیادت بی جے پی برسر اقتدار آئی ہے، فرقہ پرستوں کی فرقہ پرستی مزید بڑھتی ہی جا رہی ہے۔

    • IBN7
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی۔ جب سے مرکز میں وزیراعظم نریندر مودی کی زیر قیادت بی جے پی برسر اقتدار آئی ہے، فرقہ پرستوں کی فرقہ پرستی مزید بڑھتی ہی جا رہی ہے۔ یوپی کی سیاست کو گرمانے والے رام مندر کے مسئلہ کو اب دہلی یونیورسٹی میں اچھالا جا رہا ہے اور ایک سیمینار کے ذریعہ اس کے لئے ایک سازگارماحول تیار کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ آج سے 'رام جنم بھومی مندر’ کے موضوع پر دو دن کے سیمینار کا انعقاد یونیورسٹی کے آرٹس ڈپارٹمنٹ میں کیا جا رہا ہے۔ اس سیمینار کو لے کر یونیورسٹی میں ہنگامہ برپا ہے۔ جہاں ایک طرف اے بی وی پی سمیت دوسری طالب علم تنظیمیں اس کی حمایت کر رہی ہیں تو وہیں این ایس یو آئی اور بائیں بازوکی تنظیم آئسا اس کی زبردست مخالفت کر رہی ہیں۔ دہلی پولیس نے مظاہرہ کر رہے طالب علموں کو حراست میں لیا ہے۔

      اس سیمینار میں شرکت کرنے کے لئے بی جے پی لیڈر سبرامنیم سوامی بھی پہنچ چکے ہیں۔ سوامی کا کہنا ہے کہ جو لوگ اس سیمینار کے خلاف مظاہرہ کر رہے ہیں وہ عدم روادار ہیں۔ ہر سال ایک نہ ایک الیکشن ہے تو ایسا نہیں کہہ سکتے کہ انتخابات کے لئے ہے۔ سوامی نے یہ دعوی بھی کیا کہ 99 فیصد ہندو اور مسلم اور عیسائی بھی مندر کے حق میں ہیں۔ الہ آباد ہائی کورٹ نے بھی کہا کہ وہاں رام للا کا مندر ہے۔ ہم جیت کے لئے پرامید ہیں۔ سوامی نے کہا کہ میں نے بہت باتیں کہیں اور وہ صحیح ہوئی ہیں۔ رام مندر کے خلاف کوئی معاملہ نہیں ہے۔ مندر ضرور بنے گا۔ اگر لوگ پرامن احتجاج کرتے ہیں تو ٹھیک ہے لیکن تشدد کریں گے تو ٹھیک نہیں۔

      سوامی نے بتایا کہ آج ہم لوگ اس مسئلے پربحث کریں گے کہ کیا ہمارے پاس ثبوت ہیں؟ کیا قانونی بنیاد ہے؟ سیمینار کے بعد ہم بائیں بازو کو یہ بھیجیں گے، دیکھتے ہیں وہ کیا جواب دیتے ہیں۔ بتا دیں کہ دہلی یونیورسٹی نے وی ایچ پی کے سابق صدر اشوک سنگھل کی قائم کردہ ایک تنظیم کو رام مندر پر سیمینار کرنے کی اجازت دی تھی۔ لیکن یونیورسٹی کے طالب علموں اور اساتذہ کی تقریباً11 تنظیمیں اس کی پرزور مخالفت کر رہی ہیں۔

       
      First published: