ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

دہلی فساد میں مارے گئے ہیڈ کانسٹیبل رتن لال کو شہید کا درجہ

دہلی تشدد میں مارے گئے راجستھان میں سیکر ضلع کے ہیڈ کانسٹیبل رتن لال کو مرکزی حکومت نے شہید کا درجہ دیا ہے۔ یہ اطلاع آج سیکر کے ایم ایل اے سوامی سومیدھا نند سرسوتی نے دیتے ہوئے بتایا کہ دہلی پولیس میں ہیڈ کانسٹیبل رتن لال کی اہلیہ کو سرکاری نوکری،ایک کروڑ روپئے اور شہید کو ملنے والی تمام سہولیات فراہم کی جا ئیں گی۔

  • Share this:
دہلی فساد میں مارے گئے  ہیڈ کانسٹیبل رتن لال کو شہید کا درجہ
دہلی تشدد میں مارے گئے راجستھان میں سیکر ضلع کے ہیڈ کانسٹیبل رتن لال کو مرکزی حکومت نے شہید کا درجہ دیا ہے۔ یہ اطلاع آج سیکر کے ایم ایل اے سوامی سومیدھا نند سرسوتی نے دیتے ہوئے بتایا کہ دہلی پولیس میں ہیڈ کانسٹیبل رتن لال کی اہلیہ کو سرکاری نوکری،ایک کروڑ روپئے اور شہید کو ملنے والی تمام سہولیات فراہم کی جا ئیں گی۔

دہلی تشدد میں مارے گئے راجستھان میں سیکر ضلع کے ہیڈ کانسٹیبل رتن لال کو مرکزی حکومت نے شہید کا درجہ دیا ہے۔ یہ اطلاع آج سیکر کے ایم ایل اے سوامی سومیدھا نند سرسوتی نے دیتے ہوئے بتایا کہ دہلی پولیس میں ہیڈ کانسٹیبل رتن لال کی اہلیہ کو سرکاری نوکری،ایک کروڑ روپئے اور شہید کو ملنے والی تمام سہولیات فراہم کی جا ئیں گی۔ اس مطالبے پر شہید کے آبائی گاؤں تہاولی کے مقامی لوگ کل سے احتجاج کر رہےتھے۔دوسری جانب اسی مطالبے کے سلسلے میں ہزاروں لوگوں نے فتح پور منڈاوا شاہراہ بلاک کر دیا تھا۔

شمال مشرق دہلی (North East Delhi) میں گزشتہ دودنوں میں شہریت ترمیمی قانون(CAA) کو لیکر بھڑکے تشدد میں اب تک 18 لوگوں کی موت ہوچکی ہے جبکہ 56 پولیس اہلکار سمیت 200 لوگ زخمی بتائے جارہے ہیں۔ اس درمیا بجھن پورہ اور کھریجی خاص علاقے میں منگل کو آگ زنی اور پتھراؤ ہونے کے بعد پولیس نے فلیگ مارچ کیا۔ پولیس کے مطابق، سیلم پور میں حالات اب سدھرتے نظررہے ہیں۔ یہ صبح 4:30 بجے کے بعد  سے تشدد کا کوئی واقعہ سامنے نہیں آیا ہے۔ وہیں پولیس نے بابرہور ، جعفرآباد اور گوکلپوری میں آمدورفت بند کر رکھا  ہے۔

 خبروں کے مطابق ، شمال مشرقی دہلی کے برہم پور۔مصطفیٰ آباد میں پتھراؤ ہوا ہے۔ رات کے اوقات میں ساڑھے4 بجے کے بعد دہلی میں جاری تشدد  نے شدت اختیار کرلی ہے۔ لیکن اب دہلی میں  حالات معمول پر آرہے ہیں۔





وہیں وزیراعظم نریندرمودی کا کہناہےکہ وہ دہلی کےحالات کا جائزہ لے رہے ہیں۔


1:58 pm (IST)
وزیراعظم مودی نے امن برقراررکھنے کی اپیل کی ہے۔


واضح رہے کہ شمال مشرقی  دہلی میں  تشدد کا معاملہ پر ہائی کورٹ میں  سماعت ہوئی ہے۔عدالت نے پولیس سے  پوچھا۔کیا آپ نے تینوں افراد کے ویڈیو دیکھے ہیں؟۔پولیس نے  کہا دو ویڈیو دیکھے ہیں، کپل مشرا کا ویڈیو نہیں دیکھاہے۔ جس پر کورٹ نے کورٹ نے کہا ہر چینل پر ویڈیو چل رہے ہیں۔آپ کہہ رہے ہیں نہیں دیکھا۔عدالت نے کہا ہم مانیں کہ آپ یہ ویڈیو پہلی بار دیکھ رہے  ہیں۔ یادرہے کہ کپل مشرا پرفساد برپاکرنے کا الزام ہے۔


First published: Feb 26, 2020 02:19 PM IST