ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

دہلی تشدد: عام آدمی پارٹی کا پولیس سے سوال۔ بی جے پی لیڈران کے خلاف FIR کب؟

ملی جانکاری کے مطابق شمال مشرقی دہلی میں ہوئے تشدد کو لیکر پولیس نے کل 148 ایف آئی آر درج کی ہیں اور 630 لوگوں کو گرفتار یا حراست میں لیا گیا ہے۔ دہلی پولیس کے ترجمان نے جمعے کو یہ اطلاع دی۔ ترجمان مندیپ سنگھ رنددھاوا نے کہا کہ فارینسک سائنس لیبارٹری ٹیم کو طلب کیا گیا ہے اور جرائم کے مناظر کی دوبارہ تحقیقات کی جارہی ہے۔

  • Share this:
دہلی تشدد: عام آدمی پارٹی کا پولیس سے سوال۔ بی جے پی لیڈران کے خلاف FIR  کب؟
ملی جانکاری کے مطابق شمال مشرقی دہلی میں ہوئے تشدد کو لیکر پولیس نے کل 148 ایف آئی آر درج کی ہیں اور 630 لوگوں کو گرفتار یا حراست میں لیا گیا ہے۔ دہلی پولیس کے ترجمان نے جمعے کو یہ اطلاع دی۔ ترجمان مندیپ سنگھ رنددھاوا نے کہا کہ فارینسک سائنس لیبارٹری ٹیم کو طلب کیا گیا ہے اور جرائم کے مناظر کی دوبارہ تحقیقات کی جارہی ہے۔

نئی دہلی: راجدھانی دہلی کے شمال مشرقی علاقہ میں ہوئے تشدد  (Delhi Violence) پر سیاسی پارٹیوں کے درمیان الزامات کا دور جاری ہے۔ عام آدمی پارٹی کی لیڈر اور راجیہ سبھا کے ممبر پارلیمنٹ سنجے سنگھ نے اس معاملے پر سوال اٹھائے اور پوچھا، "اشتاعلا ناگیز بیان" دینے والے بی جے پی لیڈران کا نام بھی شکایت میں شامل کیا گیا ہے یا نہیں؟ پوچھا کہ کیا ان ایف آئی آر میں اشتعال انگیز بیان دیکر دہلی میں آگ لگانے والوں کے نام شامل ہیں؟ کیا اب میڈیا پوچھے گاکہ کس کے دباؤ میں بی جے پی نے اشتعال انگیز بیان دئے ہیں۔

ملی جانکاری کے مطابق  شمال مشرقی دہلی میں ہوئے تشدد کو لیکر پولیس نے کل 148 ایف آئی آر درج کی ہیں اور 630 لوگوں کو گرفتار یا حراست میں لیا گیا ہے۔ دہلی پولیس کے ترجمان نے جمعے کو یہ اطلاع دی۔ ترجمان مندیپ سنگھ رنددھاوا نے کہا کہ فارینسک سائنس لیبارٹری ٹیم کو طلب کیا گیا ہے اور جرائم کے مناظر کی دوبارہ تحقیقات کی جارہی ہے۔

ان کل معاملوں میں 25 معاملے ہتھیار قانون کے تحت درج کئے گئے ہیں۔ رندھاوا نے کہا، "جانچ جاری ہے اور ہم نے ایس ایس ایل پارٹیوں کو بلاہا ہے۔ ہم جرائم کی تصویریں اور ویڈیوز کا پھر سے معائنہ کررہے ہیں۔ ہم نے حالات پر قابو پالیا ہے اور حالات بہتر ہورہے ہیں۔ افسران کے ساتھ علاقوں میں (فوج) کی تعیناتی رہے گی۔ ہم نے امن کمیٹیوں کے ساتھ تقریا 400 میٹنگ کی ہیں۔


(ایجنسی ان پٹ کے ساتھ)

First published: Feb 29, 2020 10:24 AM IST