ہوم » نیوز » No Category

دہلی وقف بورڈ کا مسلم بچوں کیلئے پانچ اسکول قائم کرنے کا فیصلہ

دہلی : دہلی وقف بورڈ کے چیئرمین امانت اللہ خان نے اعلان کیا ہے کہ دہلی وقف بورڈ مسلم بچوں کی تعلیم کے لئے پانچ نئے اسکول شروع کرے گا ۔

  • ETV
  • Last Updated: Mar 30, 2016 09:13 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
دہلی وقف بورڈ کا مسلم بچوں کیلئے پانچ اسکول قائم کرنے کا فیصلہ
دہلی : دہلی وقف بورڈ کے چیئرمین امانت اللہ خان نے اعلان کیا ہے کہ دہلی وقف بورڈ مسلم بچوں کی تعلیم کے لئے پانچ نئے اسکول شروع کرے گا ۔

دہلی : دہلی وقف بورڈ کے چیئرمین امانت اللہ خان نے اعلان کیا ہے کہ دہلی وقف بورڈ مسلم بچوں کی تعلیم کے لئے پانچ نئے اسکول شروع کرے گا ۔ چیئرمین کے مطابق مسلم بچوں کی تعلیم کی بدتر صورتحال کے پیش نظر یہ قدم اٹھایا جارہا ہے۔

خیال رہے کہ دہلی میں وقف کی کافی زمینیں ہیں ، لیکن اب تک ان پر کام نہیں ہوا تھا۔ امانت اللہ خان نے چیئرمین بننے کے بعد ہی مسلمانوں کی تعلیم کے لئے کام کرنے کا وعدہ کیا تھا۔ ان کا کہنا ہے کہ اسکولوں کا معیار کسی بھی اچھے اسکول سے کم نہیں ہوگا۔

دہلی کے مسلم علاقوں پرانی دہلی ، اوکھلا ، تغلق آباد اور سلیم پور و مصطفی آباد میں سرکاری اسکولوں کی کافی کمی ہے۔ مسلم بچوں کو دوسرے علاقوں کے اسکولوں میں بھی دہلی تعلیمی پالیسی میں نیبر ہوڈ جیسی پالیسی کے سبب داخلہ ملنا مشکل ہی نہیں تقریبا ناممکن بن گیا ہے۔ انہی پریشانیوں کے پیش نظر شیخ سرائے ، مہرولی ، سرائے کالے خاں اور نظام الدین کے علاقوں میں پانچ اسکول کھولے جائیں گے۔

امانت اللہ خان کے مطابق ان کے پاس کئی ایسے والدین آئے ، جنہوں نے تین درجن سے زائد اسکولوں میں داخلہ فارم بھرا ، لیکن ان کے بچہ کو کہیں بھی داخلہ نہیں ملا ۔ وہ چاہتے ہیں کہ وقف زمینوں کو مسلمانوں کی ترقی کے لئے استعمال کیا جائے ۔

First published: Mar 30, 2016 09:13 PM IST