உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ایوارڈ واپسی پر ساہتیہ اکادمی کے سامنے ادیبوں کے دو گروپ کا مظاہرہ

    نئی دہلی: کنڑ کے مشہور مصنف ایس ایم كلبرگي کے قتل اور ملک میں بڑھتی ہوئی فرقہ واریت کے خلاف اب تک 50 سے زائد مصنفین کی طرف سے ایوارڈ واپس کئے جانے کے معاملے پر آج حکومت حامی اور حکومت مخالف گروہوں نے ساہتیہ اکادمی کے سامنے مظاہرہ کیا اور ایک دوسرے پر الزام تراشی کی۔

    نئی دہلی: کنڑ کے مشہور مصنف ایس ایم كلبرگي کے قتل اور ملک میں بڑھتی ہوئی فرقہ واریت کے خلاف اب تک 50 سے زائد مصنفین کی طرف سے ایوارڈ واپس کئے جانے کے معاملے پر آج حکومت حامی اور حکومت مخالف گروہوں نے ساہتیہ اکادمی کے سامنے مظاہرہ کیا اور ایک دوسرے پر الزام تراشی کی۔

    نئی دہلی: کنڑ کے مشہور مصنف ایس ایم كلبرگي کے قتل اور ملک میں بڑھتی ہوئی فرقہ واریت کے خلاف اب تک 50 سے زائد مصنفین کی طرف سے ایوارڈ واپس کئے جانے کے معاملے پر آج حکومت حامی اور حکومت مخالف گروہوں نے ساہتیہ اکادمی کے سامنے مظاہرہ کیا اور ایک دوسرے پر الزام تراشی کی۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی: کنڑ کے مشہور مصنف ایس ایم كلبرگي کے قتل اور ملک میں بڑھتی ہوئی فرقہ واریت کے خلاف اب تک 50 سے زائد مصنفین کی طرف سے ایوارڈ واپس کئے جانے کے معاملے پر آج حکومت حامی اور حکومت مخالف گروہوں نے ساہتیہ اکادمی کے سامنے مظاہرہ کیا اور ایک دوسرے پر الزام تراشی کی۔


      ساہتیہ اکادمی کی مجلس عاملہ کی ہنگامی میٹنگ آج صبح جیسے ہی شروع ہوئی حکومت کے حامیوں میں شامل ہندی کے مشہور مصنف نریندر کوہلی، کیندریہ ہندی سنستھان کے نائب صدر اور پریم چند ادب کے ماہر ڈاکٹر کمل کشور گوینکا، محکمہ اشاعت کے سابق ڈائریکٹر پدم شری شیام سنگھ ششی، بھارت بھون اور ساہتیہ کلاکونسل سے منسلک مشہور ڈرامہ نگار دیا پرکاش سنہا، سینئر صحافی اچيتانندمشر، ہندی کی مصنفہ چندركانتا کمد شرم اور دہلی یونیورسٹی میں ہندی کے پروفیسر اوینیجنیش اوستھی ایوارڈ واپس کرنے والے مصنفین کی مخالفت میں مظاہرہ کرنے لگے۔


      دریں اثنا، ایوارڈ واپس کرنے والوں کی حمایت میں مصنفین کا خاموش امن مارچ بھی ساہتیہ اکادمی پہنچا۔ترقی پسند مصنفین، جن سنسكرتی منچ، آل انڈیا ترقی پسند مصنفین، دلت لیکھک سنگھ جن ناٹیہ منچ اور دیگر تنظیموں سے منسلک سینکڑوں مصنفین نے بھی حکومت کی پالیسیوں کے خلاف مظاہرہ کیا۔ ان میں نامور قصہ گو شیکھر جوشی، ساہتیہ اکادمی ایوارڈ واپس کرنے والے انگریزی کے مشہور شاعر کیری این داسوالا، گیتا هریهرن، مشہور مصنفہ انامیکا ،مشہور قصہ گو پنکج بشٹ، ممتازناقد مرلی منوہر پرساد سنگھ، بی بی سی کے سابق صحافی اور شاعر نيلابھ، پنکج سنگھ، تھیٹر سے منسلک مالاشري ہاشمی ، ہریانہ اکادمی کا ایوارڈ واپس کرنے والے منموہن وغیرہ شامل ہیں۔


      ان دھڑوں کے مصنفین نے اکیڈمی کے صدر کو اپنے اپنے میمورنڈم بھی پیش کئے۔

      First published: