உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جی ایس ٹی بل پر راجیہ سبھا میں اگلے ہفتے بحث ہونے کا امکان

    نئی دہلی:معیشت کی ترقی کے لئے اہم مانے جا نے والے شدت سے منتظر اشیا اور سروس ٹیکس (جی ایس ٹی) بل اور زمینی املاک بل پر راجیہ سبھا میں اگلے ہفتے بحث ہوگی۔

    نئی دہلی:معیشت کی ترقی کے لئے اہم مانے جا نے والے شدت سے منتظر اشیا اور سروس ٹیکس (جی ایس ٹی) بل اور زمینی املاک بل پر راجیہ سبھا میں اگلے ہفتے بحث ہوگی۔

    نئی دہلی:معیشت کی ترقی کے لئے اہم مانے جا نے والے شدت سے منتظر اشیا اور سروس ٹیکس (جی ایس ٹی) بل اور زمینی املاک بل پر راجیہ سبھا میں اگلے ہفتے بحث ہوگی۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی:معیشت کی ترقی کے لئے اہم مانے جا نے والے شدت سے منتظر اشیا اور سروس ٹیکس (جی ایس ٹی) بل اور زمینی املاک بل پر راجیہ سبھا میں اگلے ہفتے بحث ہوگی۔  راجیہ سبھا کی کام کاج کمیٹی نے جی ایس ٹی بل پر بحث کے لئے چار گھنٹے اور زمینی املاک بل کے لئے دو گھنٹے کا وقت طے کیا ہے۔ یہ دونوں بل راجیہ سبھا کی اسٹنڈنگ کمیٹی کے پاس تھے اور اس نے دونوں پر اپنی رپورٹ سونپ دی ہے۔


      جی ایس ٹی بل لوک سبھا نے منظور کر دیا تھا لیکن اپوزیشن کے سخت مخالفت کی وجہ سے راجیہ سبھا میں اسے اسٹنڈ نگ کمیٹی کے پاس بھیج دیا گیا ہے۔ کانگریس اس بل پر اب بھی کچھ اعتراض کر رہی ہے۔ حکومت گزشتہ کچھ دنوں سے اس سے اور دیگر جماعتوں کے ساتھ بات چیت کر رہی ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے گزشتہ ہفتے کانگریس کی صدر سونیا گاندھی اور سابق وزیر اعظم منموهن سنگھ کے ساتھ اس معاملے پر بات چیت کی تھی۔


      سرمائی اجلاس کے دوسرے ہفتے میں کچھ مسائل پر ہنگامے کی وجہ سے راجیہ سبھا میں کوئی خاص کام کاج نہیں ہو پایا ہے اور حکومت اگلے ہفتے میں دونوں ایوانوں کے لئے بھاری بھرکم ایجنڈا ہے۔ اس دوران لوک سبھا میں چار بل بحث کے لئے لانے کی تجویز ہے جبکہ دو پہلے سے ہی درج ہے۔ راجیہ سبھا میں بھی جی ایس ٹی اور زمینی املاک بل سمیت سات بل بحث کے لئے لانے کا منصوبہ اور تین بل پہلے ہی درج ہے۔


      لوک سبھا میں ہائی کورٹ اور سپریم کورٹ کے جج کی تنخواہ اور سروس کی شرائط ترمیمی بل 2015 پر بحث چل رہی ہے جبکہ ثالثی اور مصالحت صلح صفائی (ترمیمی) بل 2015 پہلے ہی ایجنڈے میں درج ہے۔ اس کے علاوہ، انڈین ٹرسٹس (ترمیمی) بل 2015، بونس کی ادائیگی (ترمیمی) بل 2015، صنعت (ریگولیشن اور ترقی) ترمیمی بل 2015 اور انسداد بدعنوانی (ترمیمی) بل 2013 بھی لوك سبھا میں بحث کے لئے پیش کئے جائیں گے۔


      ایوان میں اس کے علاوہ رواں مالی سال سے منسلک اضافی مطالبات زر اور13۔ 2012 کے اضافی مطالبات زرپر بھی بحث اور پاس کرنے کے لئے پیش کرنے کی تجویز ہے۔


      راجیہ سبھا میں کرپشن (ترمیمی) بل 2013 پر بحث شروع ہو چکی ہے جبکہ نیگوشیبل انسٹرومنٹس (ترمیمی) بل 2015 اور معلومات فراہم تحفظ (ترمیمی) بل 2015 پہلے سے ہی درج ہے۔ ان کے علاوہ بچوں کے ساتھ انصاف (دیکھ بھال اور تحفظ) بل 2015، جی ایس ٹی سے متعلق آئین (122 ویں ترمیم) بل 2014، ایس سی ایس ٹی (انسداد مظالم ) ترمیمی بل 2015، خودمختاری ایکٹ (مسترد) بل 2015، رپيلنگ اینڈ امیڈنگ (تیسری ) بل 2015، زمینی املاک (ریگولیشن اور ترقی) بل 2013 اور چائلڈ لیبر (تحفظ اور قوانین) ترمیمی بل 2012 بحث کے لئے ایوان میں رکھا جائے گا۔


      لوک سبھا میں اگلے ہفتے غیر قانون سازی کے کام کاج کے لئے بہت سے مسائل درج کئے گئے ہیں۔ اس دوران ملک میں خشک سالی کے حالات، مہنگائی اور ہندوستان کے پڑوسی ممالک کے ساتھ تعلقات پر بحث ہوگی۔ راجیہ سبھا میں بھی نیپال کے حالات، نیپال کے ساتھ ہندوستان کے تعلقات اور مہنگائی پر بھی بحث ہو سکتی ہے۔



      پارلیمنٹ کے موجودہ سیشن میں ابھی تک لوک سبھا میں دو بل منظور کئے گئے ہیں۔ ان کیرج بائی بائی ایئر (ترمیمی) بل 2015 اور آ ئی ایس آئی بل 2015 ہیں۔ واحدثالثی اور صلح صفائی (ترمیمی) 2015 لوك سبھا میں پیش کیا گیا ہے جبکہ راجیہ سبھا میں کوئی نیا بل پیش نہیں کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ دونوں ایوانوں میں تمل ناڈو میں سیلاب کی صورتحال پر بھی بات چیت کی گئی ہے۔

      First published: