உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    لوک سبھا میں عشرت جہاں معاملہ پر بحث ، راجناتھ نے کہا : مودی کو پھنسانے کیلئے رچی گئی تھی سازش

    نئی دہلی: وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے سابقہ ترقی پسند اتحاد (یو پی اے) حکومت پر عشرت جہاں معاملے میں گجرات کے سابق وزیر اعلی نریندر مودی کو پھنسانے کے لئے گہری سازش رچنے کا الزام لگاتے ہوئے آج کہا کہ ان کی وزارت اس معاملے کی باریک بینی سے تحقیقات کر رہی ہے اور پوری تفتیش کے بعد ہی آگے کی کارروائی کا فیصلہ کیا جائے گا۔

    نئی دہلی: وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے سابقہ ترقی پسند اتحاد (یو پی اے) حکومت پر عشرت جہاں معاملے میں گجرات کے سابق وزیر اعلی نریندر مودی کو پھنسانے کے لئے گہری سازش رچنے کا الزام لگاتے ہوئے آج کہا کہ ان کی وزارت اس معاملے کی باریک بینی سے تحقیقات کر رہی ہے اور پوری تفتیش کے بعد ہی آگے کی کارروائی کا فیصلہ کیا جائے گا۔

    نئی دہلی: وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے سابقہ ترقی پسند اتحاد (یو پی اے) حکومت پر عشرت جہاں معاملے میں گجرات کے سابق وزیر اعلی نریندر مودی کو پھنسانے کے لئے گہری سازش رچنے کا الزام لگاتے ہوئے آج کہا کہ ان کی وزارت اس معاملے کی باریک بینی سے تحقیقات کر رہی ہے اور پوری تفتیش کے بعد ہی آگے کی کارروائی کا فیصلہ کیا جائے گا۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی: وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے سابقہ ترقی پسند اتحاد (یو پی اے) حکومت پر عشرت جہاں معاملے میں گجرات کے سابق وزیر اعلی نریندر مودی کو پھنسانے کے لئے گہری سازش رچنے کا الزام لگاتے ہوئے آج کہا کہ ان کی وزارت اس معاملے کی باریک بینی سے تحقیقات کر رہی ہے اور پوری تفتیش کے بعد ہی آگے کی کارروائی کا فیصلہ کیا جائے گا۔
      لوک سبھا میں عشرت جہاں معاملے میں حلف نامے میں مبینہ ردوبدل کے بارے میں بی جے پی کے نشی کانت دوبے اور کچھ دیگر ارکان کی جانب سے خصوصی توجہ دلاؤ تحریک پر بحث کے بعد مسٹر سنگھ نے کہا کہ وہ ایوان اور ملک کو یقین دلانا چاہتے ہیں کہ ان کی حکومت دہشت گردی کے نام پر سیاست نہیں کرے گی اور دہشت گردی سے سختی سے پیش آئی گی۔
      سابقہ حکومت نے دہشت گردی کو مذہبی رنگ دینے کی کوشش کی تھی اور اس وقت کے وزیر داخلہ نے بھگوا دہشت گردی کی بات کہی تھی۔انہوں نے کہا کہ موقع پرست سیکولرازم كو ملک کبھی قبول نہیں کر سکتا۔

      First published: