ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

لاک ڈاون میں یہاں آن لائن ہوگی عید الفطر کی نماز ، جانئے کیسے ہوسکتے ہیں شریک

معروف شیعہ عالم دین مولانا کلب جواد نے فقہ جعفر یہ کے لوگوں کے لئے عید الفطر کی نماز آن لائن پڑھانے کا فیصلہ کیا ہے ۔

  • Share this:
لاک ڈاون میں یہاں آن لائن ہوگی عید الفطر کی نماز ، جانئے کیسے ہوسکتے ہیں شریک
لاک ڈاون میں یہاں آن لائن ہوگی عید الفطر کی نماز ، جانئے کیسے ہوسکتے ہیں شریک

لکھنئو: کل یعنی 25 مئی کو عید الفطر ( Eid ul Fitr 2020 ) کی نماز ادا کی جانی ہے ۔ یہ ایسا موقع ہوتا ہے کہ جب لاکھوں لوگ عید گاہ اور بڑی مساجد میں خدا کے سامنے سجدہ شکر ادا کرتے ہیں ۔ لیکن اہم مسئلہ یہ ہے کہ لاک ڈاون کے سبب مساجد بند ہیں ۔ لاک ڈاون کے ضابطوں کی وجہ سےصرف چار پانچ لوگ ہی مسجد میں رہ کر نماز ادا کرسکتے ہیں ۔ لہٰذا لوگوں کو گھروں پر رہ کر ہی عید کی نماز ادا کرنی ہوگی ۔


معروف شیعہ عالم دین مولانا کلب جواد نے فقہ جعفر یہ کے لوگوں کے لئے عید الفطر کی نماز کو آن لائن پڑھانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ مولانا کلب جواد اپنے گھر کے امام باڑے میں چار لوگوں کو نماز پڑھائیں گے اور خطبہ پیش کریں گے ، جسے مجلس علماء ہند کی ویب سائٹ اور سوشل میڈیا کے دوسرے ذریعوں سے آن لائن نشر کیا جائے گا ۔ اگر لوگ چاہیں تومذکورہ ذریعہ سے نماز ادا کرسکتے ہیں ۔ مولانا کہتے ہیں یہ نظم اس لئے کیا گیا ہے کہ عید کی نماز کی سورتیں اور خطبہ طویل ہوتا ہے اور عید کی نماز جماعت کے ساتھ ادا کی جاتی ہے ۔ لیکن ساتھ میں یہ بھی واضح کردیا گیا ہے کہ آن لائن نماز ادا کرنے والے لوگوں کو جماعت کی نہیں بلکہ انفرادی نیت کے ساتھ نماز ادا کرنی ہوگی ۔ آن لائن نماز صبح گیارہ بجے شروع ہوگی ۔


معروف شیعہ عالم دین مولانا کلب جواد
معروف شیعہ عالم دین مولانا کلب جواد


ادھرعیش باغ عید گاہ کے امام  مولانا خالد رشید فرنگی محلی نے لوگوں سے یہ اپیل کی ہے کہ مساجد میں صرف چار پانچ لوگ ہی نماز عید الفطر ادا کریں ۔ باقی لوگ اپنے گھروں پر رہ کر چاشت کی نماز ادا کریں ۔ ساتھ ہی سبھی مسالک و مکاتب کے علما کی جانب سے یہ اپیلیں بھی مسلسل کی جارہی ہیں کہ نہایت سادگی سے عید منائیں اور عید کی خریداری و تیاری پر خرچ ہونے والی رقم کا بڑا حصہ پریشان حال غریبوں ، بے روزگاروں اور مسکینوں پر خرچ کریں ۔

جس طرح سے پورے رمضان روزہ داروں نے سنجیدگی ، استقامت اور صبر و تحمل سے کام لیا ہے ،  اسی طرح عید پر بھی امن و امان ، بھائی چارہ اور اتحاد قائم رکھیں ۔ وبا کے مہلک خطرے کے پیش نظر گلے مل کر اور مصافحہ کرکے عید کی مبارک باد نہ پیش کریں ۔ بلکہ زبانی طور پر اپنی خوشیوں کا اظہار کریں ۔ وبا کے خاتمے اور ملک و عوام کی سلامتی کیلئے عید کے موقع پر خصوصی دعائیں کریں ۔
First published: May 24, 2020 10:51 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading