உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Ban on Election Rally: الیکشن کمیشن کا بڑا فیصلہ ، ریلی اور روڈ شو پر جاری رہے گی پابندی

    مرکزی الیکشن کمیشن۔ فائل فوٹو

    مرکزی الیکشن کمیشن۔ فائل فوٹو

    الیکشن کمیشن (Election Commission) نے ہفتہ کو پانچ ریاستوں میں ہونے والے اسمبلی انتخابات کے حوالے سے ایک میٹنگ کی ۔ میٹنگ میں انتخابی ریلی، روڈ شوز اور جلوس پر پابندی برقرار رکھنے کا بڑا فیصلہ کیا گیا ہے ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : الیکشن کمیشن (Election Commission)  نے ہفتہ کو پانچ ریاستوں میں ہونے والے اسمبلی انتخابات کے حوالے سے ایک میٹنگ کی ۔ میٹنگ میں انتخابی ریلی، روڈ شوز اور جلوس پر پابندی برقرار رکھنے کا بڑا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ ذرائع کے مطابق کورونا انفیکشن کے بڑھتے ہوئے کیسز اور کورونا ویکسینیشن کی صورتحال کے پیش نظر کمیشن نے انتخابی ریلی پر پابندی کو فی الحال آگے بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے۔ کمیشن کی اس میٹنگ میں چیف الیکشن کمشنر کے علاوہ تمام کمشنرز اور ڈپٹی کمشنرز نے بھی شرکت کی ۔ اس کے علاوہ پانچ ریاستوں کے چیف الیکشن کمشنروں نے بھی کمیشن کی میٹنگ میں فیصلہ کیا ۔

      الیکشن کمیشن کی اس میٹنگ میں کورونا کی صورتحال کا جائزہ لیا گیا ، جس کے بعد انتخابی ریلیوں پر پابندی بڑھانے کا فیصلہ کیا گیا ۔ حالانکہ اس مرتبہ الیکشن کمیشن نے سیاسی جماعتوں کو پہلے سے زیادہ چھوٹ دی ہے ۔

      غور طلب یہ ہے کہ 9 جنوری کو پانچ ریاستوں کے انتخابی پروگرام کے اعلان کے دوران 15 جنوری تک ریلیوں، نکڑ میٹنگوں، پدیاترا اور سائیکل ریلیوں پر مکمل پابندی لگادی گئی تھی۔ 15 جنوری کو جائزہ لینے کے بعد کمیشن نے اس پابندی کو برقرار رکھا ، لیکن سیاسی جماعتوں کو کچھ راحت دیتے ہوئے اسے بند کمرے میں زیادہ سے زیادہ 300 افراد یا کمرے کی گنجائش کے 50 فیصد صلاحیت کے ساتھ پروگرام منعقد کرنے کی اجازت دی تھی ۔

      ذرائع کی مانیں تو انتخابات کے پہلے مرحلے کیلئے انتخابی مہم پہلے کی طرح 72 گھنٹے قبل ختم ہو جائے گی اور امید ہے کہ اس مرتبہ شاید ایک ہفتہ قبل انتخابی ریلیوں پر سے عائد پابندی کو ختم کردیا جائے ۔ حالانکہ ذرائع کا ماننا ہے کہ اگر علاحدہ چھوٹ مل بھی جاتی ہے تو بھی تشہیر پر پابندی رہے ۔

      بتادیں کہ پانچ ریاستوں میں ہونے والے اسمبلی انتخابات 10 فروری سے شروع ہوں گے اور 7 مارچ تک چلیں گے اور تمام ریاستوں کے ووٹوں کی گنتی 10 مارچ کو ہوگی۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: