ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

چار سال میں 27 ضمنی انتخابات ، 282 سے 273 سیٹوں پر آگئی بی جے پی !۔

اترپردیش ، مہاراشٹر اور ناگالینڈ کی چار لوک سبھا سیٹوں ، 10اسمبلی سیٹوں پر ہوئے ضمنی انتخابات اور کرناٹک کی آر آر نگر سیٹ پر ہوئے ضمنی الیکشن کےنتائج سامنے آگئےہیں۔

  • Share this:
چار سال میں 27 ضمنی انتخابات ، 282 سے 273 سیٹوں پر آگئی بی جے پی !۔
فائل فوٹو ۔ پی ٹی آئی ۔

اترپردیش ، مہاراشٹر اور ناگالینڈ کی چار لوک سبھا سیٹوں ، 10اسمبلی سیٹوں پر ہوئے ضمنی انتخابات اور کرناٹک کی آر آر نگر سیٹ پر ہوئے ضمنی الیکشن کےنتائج سامنے آگئےہیں۔ کرناٹک کی سیٹ کو چھوڑ دیا جائے تو کل چودہ سیٹوں پر ضمنی انتخاب میں سے بی جے پی نے اپنے اتحادی پارٹیوں کے ساتھ مل کر صرف چار پر جیت حاصل کی ہے جبکہ 10 سیٹیں اپوزیشن پارٹیوں کےکھاتے میں گئی ہیں۔ وہیں 2014 میں مودی حکومت بننے کے بعد ملک میں کل 27 لوک سبھا سیٹوں پر ضمنی انتخابات ہوئے ، جن میں سے بی جے پی کو صرف پانچ سیٹوں پر جیت ملی ہے جبکہ آٹھ سیٹیں اپوزیشن پارٹیوں نے بی جے پی سے چھین لی ہیں۔ اس طرح 2014 کے عام انتخابات میں 282 سیٹیں جیتنے والی بی جے پی 2018 تک 273 سیٹوں پر سمٹ کر رہ گئی ہے۔

فی الحال جن چار لوک سبھا سیٹوں پر ضمنی الیکشن ہوئے ، ان میں سے تین پر پچھلی مرتبہ بی جے پی نے جیت درج کی تھی ، لیکن اس میں سے صرف ایک مہاراشٹر کے پالگھر کی سیٹ ہی بی جے پی بچانے میں کامیاب ہوسکی ۔ ضمنی انتخابات میں سب کی نگاہیں اتر پردیش کے کیرانہ لوک سبھاسیٹ پر مرکوز تھیں ، جہاں ایس پی ، بی ایس پی اور عام آدمی پارٹی سمیت اپوزیشن اتحاد کے دم پر لڑ رہے راشٹریہ لوک دل نے بی جے پی کا کمل نہیں کھلنے دیا ۔ وہیں کانگریس کی حمایت یافتہ این سی پی نے بھی بی جے پی سے مہاراشٹر کی بھنڈارا-گونڈیا سیٹ چھین لی ۔

لوک سبھا ضمنی انتخابات میں اپنی تین میں سے ایک سیٹ برقرار رکھنے والی بی جے پی کے پاس پارلیمنٹ کے 539 اراکین والے ایوان میں اب 273 کی ہی اکثریت رہ گئی ہے ۔ لوک سبھا میں 543 منتخب اراکین ہیں ، لیکن اس کی چار سیٹوں کا کوئی نمائندہ نہیں ہے۔ کرناٹک کے تین اراکین استعفی دے چکے ہیں جبکہ کشمیر کی اننت ناگ سیٹ خالی پڑی ہوئی ہے۔ اننت ناگ سیٹ کیلئے گزشتہ سال مئی میں ہونے جارہے الیکشن کو غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی کردیا گیا تھا۔

First published: May 31, 2018 11:51 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading