உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مولانا سلمان ندوی نے بنایا فلاح انسانیت بورڈ ، اجودھیا معاملہ پر صرف فریقین سے ہی بات کریں شری شری

    مولانا سلمان ندوی ۔ فائل فوٹو

    مولانا سلمان ندوی ۔ فائل فوٹو

    شری شری روی شنکر کے ساتھ مل کر اجودھیا کے متنازع معاملہ پر سمجھوتہ کرانے کی کوششوں سے سرخیوں میں آئے مولانا سلمان ندوی نے لکھنومیں فلاح انسانیت بورڈ کی تشکیل کا اعلان کیا ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      لکھنو: شری شری روی شنکر کے ساتھ مل کر اجودھیا کے متنازع معاملہ پر سمجھوتہ کرانے کی کوششوں سے سرخیوں میں آئے مولانا سلمان ندوی نے لکھنومیں فلاح انسانیت بورڈ کی تشکیل کا اعلان کیا ہے۔ مولانا سلمان ندوی نے صحافیوں سے اجودھیا معاملہ سے الگ ہونے کی وجہ بتاتے ہوئے کہا کہ ہندؤں کی طرف سے مسلسل کہا جا رہا تھا کہ وہ ہر حال میں رام مندر اسی مقام پر بنا کر رہیں گے، اس سے ان کو لگا کہ ایسے میں عدالت عظمیٰ کے فیصلے کا ہی انتظارکیا جانا چاہئے۔
      انہوں نے کہا کہ شری شری روی شنکر کو چاہئے کہ وہ بابری مسجد معاملے میں فریقین سے ہی بات چیت کریں۔ سلمان ندوی نے شری شری کے شام جیسے حالات پیدا کر دینے والے بیان پر کہا کہ وہ بیان ٹھیک نہیں تھا ، ان کو اپنے الفاظ پر توجہ دینی چاہئے، اور ایسے الفاظ سے بچنا چاہئے، جس کا غلط مطلب نکلتا ہو۔مولانا سلمان ندوی نے آل انڈ مسلم یا پرسنل لا بورڈ پر الزام عائد کیا کہ وہ صرف میاں اور بیوی تک محدود ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں گزشتہ تین برس سے بورڈ سے مطالبہ کر رہا تھا کہ میاں ،بیوی کے جھگڑوں پر رقم خرچ کرنے کی بجائے سماج کی فلاح و بہبود پر خرچ کرنا چاہئے۔
      انہوں نے کہا کہ نوتشکیل شدہ فلاح انسانیت بورڈ تمام مذاہب کے لوگوں کو ساتھ لے کر کام کریگا۔مولانا ندوی نے بتایا کہ بورڈ کا چیئرمین سپریم کورٹ کا کوئی سابق چیف جسٹس ہو گا اس کے علاوہ تمام مذاہب کے لوگوںکو نمائندگی دیتے ہوئے نائب صدر منتخب کیا جائیگا۔انہوں نے بتایا کہ جموں کشمیر، راجستھان، اترپردیش، دہلی ، پنجاب سمیت کئی ریاستوں کوارڈینیٹروں کے ناموں کا اعلان بھی کیا جا چکاہے۔ مولانا سلمان نے بتایا کہ ایک یونیورسٹی کا بھی قیام کیا جائیگا جس میں تمام زبان پڑھائی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ تمام مذاہب کی تعلیم بھی دی جائیگی۔
      First published: