உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پی ایف آئی کے دہشت گرد تنظیموں سے روابط، ISIS، سمی اور اے بی ٹی کیلئے کام کرنے کا انکشاف

    نیوز 18 ڈاٹ کام کے مطابق یہ گروپ کالعدم اسٹوڈنٹس اسلامک موومنٹ آف انڈیا (SIMI) اور کیرالہ کے ٹی نذیر گروپ کے نقش قدم پر بھی چل رہا ہے، جو لشکر طیبہ (ایل ای ٹی) سے وابستہ ہے۔ پی ایف آئی کے کارکنان شام میں اسلامک اسٹیٹ اور القاعدہ سے منسلک النصرہ فرنٹ میں شامل ہو گئے ہیں۔

    نیوز 18 ڈاٹ کام کے مطابق یہ گروپ کالعدم اسٹوڈنٹس اسلامک موومنٹ آف انڈیا (SIMI) اور کیرالہ کے ٹی نذیر گروپ کے نقش قدم پر بھی چل رہا ہے، جو لشکر طیبہ (ایل ای ٹی) سے وابستہ ہے۔ پی ایف آئی کے کارکنان شام میں اسلامک اسٹیٹ اور القاعدہ سے منسلک النصرہ فرنٹ میں شامل ہو گئے ہیں۔

    نیوز 18 ڈاٹ کام کے مطابق یہ گروپ کالعدم اسٹوڈنٹس اسلامک موومنٹ آف انڈیا (SIMI) اور کیرالہ کے ٹی نذیر گروپ کے نقش قدم پر بھی چل رہا ہے، جو لشکر طیبہ (ایل ای ٹی) سے وابستہ ہے۔ پی ایف آئی کے کارکنان شام میں اسلامک اسٹیٹ اور القاعدہ سے منسلک النصرہ فرنٹ میں شامل ہو گئے ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | Mumbai | Jammu | Hyderabad | Karnawad
    • Share this:
      پاپولر فرنٹ آف انڈیا (PFI) پر ملک گیر کریک ڈاؤن کے درمیان اعلیٰ انٹیلی جنس ذرائع نے نیوز 18 ڈاٹ کام کو بتایا کہ پی ایف آئی تنظیم کے دہشت گرد گروپوں کے ساتھ براہ راست روابط ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پی ایف آئی بنیاد پرست اسلامی اسکالرز جیسے مولانا سید ابوالامودودی (Syed Abul Maududi) اور علامہ اقبال (Allama Iqbal) کے ساتھ ساتھ اسامہ بن لادن جیسے دہشت گردوں سے متاثر ہے۔

      نیوز 18 ڈاٹ کام کے مطابق یہ گروپ کالعدم اسٹوڈنٹس اسلامک موومنٹ آف انڈیا (SIMI) اور کیرالہ کے ٹی نذیر گروپ کے نقش قدم پر بھی چل رہا ہے، جو لشکر طیبہ (ایل ای ٹی) سے وابستہ ہے۔ پی ایف آئی کے کارکنان شام میں اسلامک اسٹیٹ اور القاعدہ سے منسلک النصرہ فرنٹ میں شامل ہو گئے ہیں۔ حکام کا کہنا ہے کہ تقریباً 15 کیڈر پہلے ہی داعش میں شامل ہیں۔ آئی ایس کے پی افغانستان میں ان کے کیڈر بھی ہیں۔ جس میں عبدالغیوم، عبدالمناف، شبر اور سہیل شامل ہیں۔

      پی ایف آئی اور کئی دہشت گرد گروپوں کے درمیان مختلف رابطوں کے بارے میں تفتیشی حکام کا کہنا یہ ہے:

      پی ایف آئی اور سمی:

      وہ 2001 میں سمی پر پابندی کے بعد اس کے ایجنڈے پر عمل پیرا ہیں۔

      پی ایف آئی کے وائس چیئرمین ای ایم عبدالرحمن سمی کے قومی سکریٹری تھے۔

      پی ایف آئی کی قومی ایگزیکٹو کمیٹی کے رکن پروفیسر پی کویا بھی سمی کے رکن تھے اور جماعت اسلامی کے ساتھ رابطے میں تھے۔

      جون 2022 میں پونے میں ہونے والا دھماکہ پی ایف آئی کیڈر راشد شیخ نے کروایا تھا جو ایس ایم آئی کے سابق ممبر تھے۔

      راشد شیخ شکیل عبدالرحمٰن کے بہت قریب تھے جو کہ قمرالدین مسجد کے ٹرسٹی ہیں جو کہ سمی کے سابق ارکان کی ملاقات کی جگہ ہے۔

      پی ایف آئی اور آئی ایس آئی ایس:

      عبدالرؤف پی ایف آئی کیڈر اور تنظیم کی مونڈیری یونٹ کا علاقہ صدر محمد شیلجی أئی ایس آئی ایس کیڈر کا قریبی ساتھی ہے۔ دونوں نے ایک ساتھ ہجرت کی۔

      عبدالرؤف نے شام اور خراسان میں داعش کی بھرتیوں کے لیے مالی امداد کے ساتھ ایک تھلسن کو لاجسٹک سپورٹ بھی فراہم کی۔

      پی ایف آئی اور انصاراللہ بنگلہ ٹیم (ABT):

      اے بی ٹی ممبران جون 2022 میں پی ایف آئی کے رکن محفوظ الاسلام سے ملنے کے لیے مرشد آباد جانا تھا۔

      یہ پی ایف آئی کی سرگرمیوں کی حکمت عملی اور پھیلاؤ کا فیصلہ کرنا تھا۔ بنگلورو سیریل بلاسٹ کے ملزم کو پی ایف آئی کی حمایت حاصل تھی۔

      پی ایف آئی اسلامی سیوا سنگھ کے بانی اور 2008 کے بنگلورو سلسلہ وار دھماکہ کیس میں جیل میں بند عبدالناصر مدنی کی مکمل حمایت کر رہی ہے۔

      پی ایف آئی مدنی کی رہائی پر زور دینے کے لیے سوشل میڈیا اکاؤنٹس اور چینلز بنا رہا ہے۔

      ایک یوٹیوب چینل امجد کنیا پورم کے زیر انتظام ہے، جو کیمپس فرنٹ آف انڈیا کے ریاستی رہنما ہیں، جو پی ایف آئی سے وابستہ ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: