உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    امریکی-کینیڈا کی سرحد پر جم کر ہلاک ہونے والے خاندان کا تعلق گجرات سے، مزید لوگوں کے لاپتہ ہونے کا دعویٰ

    مرنے والے چار افراد کی قومیت کی تصدیق کرتے ہوئے کینیڈا میں ہندوستان کے ہائی کمشنر اجے بساریہ نے واقعہ کو ایک سنگین سانحہ قرار دیا۔ انھوں نے کہا کہ یہ ایک سنگین سانحہ ہے۔ ایک ہندوستانی قونصلر ٹیم آج @IndiainToronto سے منیٹوبا تک رابطہ کاری اور مدد کے لیے سفر کر رہی ہے۔ ہم ان پریشان کن واقعات کی تحقیقات کے لیے کینیڈا کے حکام کے ساتھ مل کر کام کریں گے۔

    مرنے والے چار افراد کی قومیت کی تصدیق کرتے ہوئے کینیڈا میں ہندوستان کے ہائی کمشنر اجے بساریہ نے واقعہ کو ایک سنگین سانحہ قرار دیا۔ انھوں نے کہا کہ یہ ایک سنگین سانحہ ہے۔ ایک ہندوستانی قونصلر ٹیم آج @IndiainToronto سے منیٹوبا تک رابطہ کاری اور مدد کے لیے سفر کر رہی ہے۔ ہم ان پریشان کن واقعات کی تحقیقات کے لیے کینیڈا کے حکام کے ساتھ مل کر کام کریں گے۔

    مرنے والے چار افراد کی قومیت کی تصدیق کرتے ہوئے کینیڈا میں ہندوستان کے ہائی کمشنر اجے بساریہ نے واقعہ کو ایک سنگین سانحہ قرار دیا۔ انھوں نے کہا کہ یہ ایک سنگین سانحہ ہے۔ ایک ہندوستانی قونصلر ٹیم آج @IndiainToronto سے منیٹوبا تک رابطہ کاری اور مدد کے لیے سفر کر رہی ہے۔ ہم ان پریشان کن واقعات کی تحقیقات کے لیے کینیڈا کے حکام کے ساتھ مل کر کام کریں گے۔

    • Share this:
      ایک دل دہلا دینے والے سانحے میں چار ہندوستانیوں پر مشتمل ایک خاندان امریکہ۔ کینیڈا سرحد پر انسانی اسمگلنگ کی ایک بظاہر کارروائی میں انتہائی سرد موسم کی وجہ سے ہلاک ہوگیا ہے۔ جس میں ایک بچہ بھی شامل ہے۔ اس خاندان کے بارے میں گمان کیا جاتا ہے کہ وہ گجراتی ہے۔ مینیٹوبا رائل کینیڈین ماؤنٹڈ پولیس (آر سی ایم پی) نے جمعرات کو کہا کہ بدھ کو ایمرسن کے قریب کینیڈا کی طرف سے یوایس/کینیڈا کی سرحد پر چار افراد دو بالغ، ایک نوعمر اور ایک شیر خوار بچے کی لاشیں ملی ہیں۔

      مرنے والے چار افراد کی قومیت کی تصدیق کرتے ہوئے کینیڈا میں ہندوستان کے ہائی کمشنر اجے بساریہ نے واقعہ کو ایک سنگین سانحہ قرار دیا۔ انھوں نے کہا کہ یہ ایک سنگین سانحہ ہے۔ ایک ہندوستانی قونصلر ٹیم آج @IndiainToronto سے منیٹوبا تک رابطہ کاری اور مدد کے لیے سفر کر رہی ہے۔ ہم ان پریشان کن واقعات کی تحقیقات کے لیے کینیڈا کے حکام کے ساتھ مل کر کام کریں گے۔

      مینیسوٹا کی ایک عدالت میں دائر کی گئی مجرمانہ شکایت کے مطابق امریکی جانب سے پائے جانے والے تمام غیر ملکی شہری، جو بڑے گروپ کا حصہ تھے، وہ گجراتی میں بات کرتے تھے۔ اس سانحے پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کینیڈین وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو (Justin Trudeau) نے کہا کہ ’یہ بالکل دل کو دہلا دینے والا واقعہ ہے۔ ٹروڈو نے اوٹاوا میں نامہ نگاروں کو بتایا کہ اسمگلروں نے بہتر زندگی بنانے کی ان کی خواہش کا فائدہ اٹھایا۔ یہی وجہ ہے کہ ہم وہ سب کچھ کر رہے ہیں جو ہم کر سکتے ہیں۔ ہم لوگوں کو بے قاعدہ یا غیر قانونی طریقوں سے سرحد پار کرنے کی کوشش کرنے سے روکتے ہیں۔

      دریں اثنا گاؤں کے رہائشیوں نے نے انڈین ایکسپریس کو بتایا کہ مزید تین سے چار خاندان لاپتہ ہیں۔ گاؤں کے ایک رہائشی نے بتایا کہ ہم نے تفصیلات کے لیے وزارت خارجہ کو ایک میل بھیجی ہے اور تصدیق کے لیے مرنے والوں کی تصاویر بھیجی ہیں۔ ہم نے کینیڈا میں اپنے دوستوں سے بھی رابطہ قائم کیا ہے جو مینیٹوبا پہنچ چکے ہیں، لیکن ہمیں بتایا گیا ہے کہ کینیڈین حکام انہیں تصدیق کے لیے (اسپتال) کے اندر جانے کی اجازت نہیں دے رہے ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: