உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Kisan Andolan: کسانوں نے غازی پور بارڈر NH24 پر راستہ کھولا ، راکیش ٹکیت نے دیا یہ بڑا بیان

    Kisan Andolan: کسانوں نے غازی پور بارڈر NH24 پر راستہ کھولا ، راکیش ٹکیت نے دیا یہ بڑا بیان

    Kisan Andolan: کسانوں نے غازی پور بارڈر NH24 پر راستہ کھولا ، راکیش ٹکیت نے دیا یہ بڑا بیان

    UP-Ghazipur Border Reopen: دہلی۔ غازی پور بارڈر نیشنل ہائی وے 24 پر فلائی اوور کے نیچے دہلی جانے والی سروس لین کو کھول دیا ہے ۔ کسانوں نے سب سے پہلے اسی راستے کو روکا تھا ۔ کسانوں نے راستہ کھولنے کا فیصلہ معاملہ کے سپریم کورٹ میں جانے کے بعد کیا ہے ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : مرکزی حکومت کے تین زرعی قوانین کے خلاف احتجاج کررہے کسانوں نے اپرپردیش ۔ دہلی۔ غازی پور بارڈر نیشنل ہائی وے 24 پر فلائی اوور کے نیچے دہلی جانے والی سروس لین کو کھول دیا ہے ۔ کسانوں نے سب سے پہلے اسی راستے کو روکا تھا ۔ کسانوں نے راستہ کھولنے کا فیصلہ معاملہ کے سپریم کورٹ میں جانے کے بعد کیا ہے ۔

      وہیں میڈیا نے کسان لیڈر راکیش ٹکیت سے پوچھا کہ کیا سب کچھ ہٹادیں گے ؟ اس پر انہوں نے کہا کہ ہاں سب ہٹادیں گے ، اس کے بعد دہلی جارہے ہیں اور پارلیمنٹ پر بیٹھیں گے ، جہاں یہ قانون بنایا گیا ہے ۔ ہمیں تو دہلی جانا ہے ۔ اس وقت جائے واقع پر کافی تعداد میں کسان موجود ہیں اور سروس روڈ پر لگے ٹینٹ اور دوسرا سامان ہٹانا شروع کردیا ہے ۔

      دراصل کسان آندولن کی وجہ سے روڈ بلاک ہونے پر سپریم کورٹ نے آج ایک مرتبہ پھر تشویش کا اظہار کیا ۔ عدالت نے کہا کہ کسی بھی صورت میں روڈ کو بلاک نہیں کیا جاسکتا ہے ۔ کچھ کسان تنظیموں کی جانب سے پیش سینئر وکیل دشینت دوے نے بتایا کہ کسانوں نے روڈ بلاک نہیں کیا ہے بلکہ پولیس نے کیا ہے ۔ پولیس انتظامیہ نے رام لیلا میدان میں بی جے پی کو ریلی کرنے کی اجازت دیدی ہے ، لیکن کسانوں کو نہیں دے رہی ۔ پولیس چاہے تو جہاں کسان آندولن کررہے ہیں ، وہاں بہتر ٹریفک انتظامات کرسکتی ہے ، لیکن نہیں کئے جارہے ہیں ۔

      انہوں نے یہ بھی درخواست کی کہ اسی طرح کے ایک معاملہ کی تین ججوں کی بینچ بھی سماعت کررہی ہے ، لہذا اس کو بھی وہیں بھیج دیا جانا چاہئے ۔ اس پر سرکار کی طرف سے پیش سالیسٹر جنرل تشار مہتا نے کہا کہ بینچ بدلنے کی مانگ نہیں مانی جانی چاہئے ۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ کچھ لوگ رام لیلا میدان کو اپنا مستقل پتہ بنانا چاہتے ہیں ۔

      عدالت نے کہا کہ آپ کے پاس آندولن کا حق ہے ، لیکن آخر روڈ کیوں بلاک کررکھا ہے ۔ وہ معاملہ سے وابستہ بڑے معاملات کو نہیں دیکھ رہے ، ان کی تشویش صرف اس بات کی ہے کہ روڈ کیوں بلاک کئے ہوئے ہیں ۔ سماعت کے بعد عدالت نے اس معاملہ میں کسان تنظیموں کو تین ہفتے میں جواب داخل کرنے کیلئے کہا اور معاملہ کی سماعت سات نومبر تک کیلئے ملتوی کردی ۔

      دراصل اس معاملہ میں نوئیڈا کے ایک شہری نے این سی آر میں روڈ بلاک ہونے کی وجہ سے ہونے والی پریشانیوں کے خلاف عرضی داخل کی تھی ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: