உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    فاروق عبداللہ نے وزیراعظم مودی اورامت شاہ کوملک کا سب سے بڑا دشمن قراردیا

    نیشنل کانفرنس کے صدرنےکہا کہ بی جے پی کے یہ دونوں لیڈران آج بھی ملک کے لوگوں کوزبان، مذہب اورعلاقائی بنیادوں پرتقسیم کرنے پرتلےہوئے ہیں۔

    نیشنل کانفرنس کے صدرنےکہا کہ بی جے پی کے یہ دونوں لیڈران آج بھی ملک کے لوگوں کوزبان، مذہب اورعلاقائی بنیادوں پرتقسیم کرنے پرتلےہوئے ہیں۔

    نیشنل کانفرنس کے صدرنےکہا کہ بی جے پی کے یہ دونوں لیڈران آج بھی ملک کے لوگوں کوزبان، مذہب اورعلاقائی بنیادوں پرتقسیم کرنے پرتلےہوئے ہیں۔

    • Share this:
      سری نگر:  نیشنل کانفرنس صدرڈاکٹر فاروق عبداللہ نےکہا کہ وزیراعظم نریندرمودی اور بی جے پی صدرامت شاہ ملک کے سب سے بڑے دشمن ہیں۔ انہوں نےکہا کہ دفعہ 370 کے خلاف باتیں کرنے والے آگ کے ساتھ کھیل رہے ہیں۔ فاروق عبداللہ نے سری نگرمیں جھیل ڈل کےمختلف علاقوں میں انتخابی ریلیوں سےخطاب کرتے ہوئےکہا 'مودی اور امت شاہ ہندوستان کو تباہی اور بربادی کی طرف لے گئے ہیں۔

      انہوں نے کہا کہ بی جے پی کے یہ دونوں لیڈران آج بھی ملک کے لوگوں کوزبان، مذہب اورعلاقائی بنیادوں پرتقسیم کرنے پرتلےہوئے ہیں۔ یہ دونوں ملک کےسب سے بڑے دشمن ثابت ہوئے ہیں، یہ لوگ آئین ہند کو تبدیل کرنے پر تلے ہوئے ہیں اور اس آئین کو ہند آئین بنانا چاہتےہیں۔ حالانکہ آئند ہند کے معماروں نےاس میں ہرایک طبقہ اورمذہب سے تعلق رکھنے والوں کو برابرحقوق، مذہبی آزادی، انصاف، اظہارِرائے کی آزادی اورآئینی تحفظ فراہم کیا تھا۔ اسی آئین کے تحت ہماری ریاست کے ملک کے ساتھ مشروط الحاق کو دفعہ 370 اور 35اے کے تحت تحفظ فراہم کیا گیا'۔

      اس موقع پر پارٹی کے صوبائی صدر ناصراسلم وانی، ترجمانِ اعلیٰ آغا سید روح اللہ مہدی، پارٹی لیڈران تنویر صادق، مشتاق احمد گورو اور آغا سید یوسف کے علاوہ کئی عہدیداران بھی موجود تھے۔ فاروق عبداللہ نے کہا کہ بھاجپا نے اپنے منشورمیں 370 اور 35اے کو ہٹانےکا وعدہ کیا ہے۔ مودی، امت شاہ اوردیگر بی جے پی والوں کویہ بات ذہن نشین کرلینی چاہئے کہ وہ آگ سے کھیل رہے ہیں، ایسے کسی بھی اقدام کی صورت میں ایسی آگ بھڑکے گی جس کےشعلے پورے ملک کو اپنی لپیٹ میں لےلیں گے۔

      فاروق عبداللہ نے کہا کہ بی جے پی یہاں کے اسٹیٹجیکٹ قانون کوختم کرکے یہاں غیر ریاستوں کو بسا کرہماری ریاست کے مسلم اکثریتی کردارکوختم کرنا چاہتی ہے۔ اس کام کے لئے آرایس ایس اور بھاجپا والے نے مقامی آلہ کار بھی لگائے ہیں، قلم دوات اور سیب کے نشان لیکر وہ آپ کے پاس ووٹ مانگنے ضرورآئیں گے۔ موجودہ انتخابات ہمارے اورعوام کے لئے ایک امتحان کی گھڑی ہے، ایک طرف تمام فرقہ پرست جماعتوں نے مل کر کشمیریوں کے مفادات کوسلب کرنے کے لئے تمام مشینری متحرک کردی ہے اور دوسری جانب یہاں کےعوام کی آوازکو تقسیم کرنےکے لئے نت نئے حربے اپنائے جارہے ہیں۔

      فاروق عبداللہ نےکہا کہ کشمیردشمنوں نے اپنے آلہ کاروں کو یہاں پرکام پرلگا رکھا ہے اور یہ لوگ انتخابات میں سرکاری مشینری، ووٹ کے بدلے نوٹ، طاقت کے بلبوتے اوردیگرحربے اپنانےکےلئے کام میں لگے ہوئے ہیں، ایسے میں نیشنل کانفرنس سے وابستہ ہر ایک فرد کا یہ فرض بنتا ہے کہ ان کوششوں کو ناکام بنایا جائے۔ انہوں نے کہا 'فرقہ پرست جماعتیں جموں و کشمیرکی خصوصی پوزیشن، اجتماعیت اور وحدت کوختم کے لئے کوشاں ہیں ہیں۔ ان سازشوں کا مقابلہ ہمیں مل کرکرنا ہے ، نیشنل کانفرنس ان سازشوں کے خلاف چٹان کی طرح کھڑی ہے'۔ انہوں نےکہا کہ اگرہم آج بھی دشمنوں کی چالوں کو نہیں سمجھیں گے، تو ہماری شناخت کو بہت بڑا خطرہ لاحق ہوگا۔

       
      First published: