உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اکادمی ایوارڈ واپس لوٹانے والے ادیبوں کا احتجاج اسپانسڑد ہے: جیٹلی

    نئی دہلی۔  مرکزی وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے ملک میں بڑھتے ہوئے فرقہ ورانہ واقعات کی مخالفت میں متعدد نامور ادیبوں کے ذریعہ اکادمی انعامات واپس لوٹائے جانے کو اسپانسرڈ احتجاج قرار دیا ہے۔

    نئی دہلی۔ مرکزی وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے ملک میں بڑھتے ہوئے فرقہ ورانہ واقعات کی مخالفت میں متعدد نامور ادیبوں کے ذریعہ اکادمی انعامات واپس لوٹائے جانے کو اسپانسرڈ احتجاج قرار دیا ہے۔

    نئی دہلی۔ مرکزی وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے ملک میں بڑھتے ہوئے فرقہ ورانہ واقعات کی مخالفت میں متعدد نامور ادیبوں کے ذریعہ اکادمی انعامات واپس لوٹائے جانے کو اسپانسرڈ احتجاج قرار دیا ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی۔  مرکزی وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے ملک میں بڑھتے ہوئے فرقہ ورانہ واقعات کی مخالفت میں متعدد نامور ادیبوں کے ذریعہ اکادمی انعامات واپس لوٹائے جانے کو اسپانسرڈ احتجاج قرار دیا ہے۔


      مسٹر جیٹلی نے فیس بک پر ایک مضمون میں دادری میں ایک مسلمان کے ہجوم کے ذریعہ قتل کے واقعہ کو افسوسناک اور قابل مذمت قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے واقعات کو روکنے کی ذمہ داری متعلقہ ریاستی حکومت کی ہے۔


      مسٹر جیٹلی نے کہا کہ ادیبوں کی مخالفت حقیقی ہے یا اسپانسرڈ؟ یہاں بڑی تعداد میں ایسے ادیب موجود ہیں جن کا جھکاؤ بائیں بازو یا نہرو کی طرف ہے اور انہیں سابقہ حکومتوں نے اعزاز دیا ہے۔ گزشتہ برس مئی میں ہماری حکومت بننے کےبعد سے ہی ادیبوں کا یہ طبقہ مخالفت کررہا ہے۔

      First published: