ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ہریانہ میں گائے کا گوشت فروخت کرنے کے الزام میں سات افراد کے خلاف کیس درج

چندی گڑھ ۔ ہریانہ پولیس نے گائے کا گوشت فروخت کرنے کے الزام میں سات افراد کے خلاف ایف آئی آر درج کی ہے۔

  • Agencies
  • Last Updated: Nov 07, 2017 12:00 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ہریانہ میں گائے کا گوشت فروخت کرنے کے الزام میں سات افراد کے خلاف کیس درج
علامتی تصویر

چندی گڑھ ۔ ہریانہ پولیس نے گائے کا گوشت فروخت کرنے کے الزام میں سات افراد کے خلاف ایف آئی آر درج کی ہے۔ پولیس کے مطابق، معاملہ میوات کے فیروزپور جھرکا پولیس اسٹیشن میں سات مسلمانوں کے خلاف درج کیا گیا ہے۔ ان پرمبینہ طور پر بیف بریانی کی فروخت کرنے اور اس کا کاروبار کرنے کا الزام ہے۔


ملزمین پر ہریانہ گئو تحفظ ایکٹ، 2015 کے تحت کیس درج کیا گیا ہے ۔ ہریانہ گئو  تحفظ  ایکٹ کے تحت، گئو کشی کیس میں 10 سال کی قید کی سزا کا التزام ہے۔ درخواست گزار کے وکیل روی شرما نے نیوز ایجنسی آئی اے این ایس کو بتایا کہ، "ہریانہ پولیس نے پیر کے روز پنجاب اور ہریانہ ہائی کورٹ میں ایف آئی آر کی ایک نقل جمع کردی ہے۔"


سیاست ڈاٹ کام کے مطابق، اس معاملہ میں شکایت اور جانور بہبود بورڈ کے نریش كاديان نے فیروز پور جھركا کے ڈپٹی عدالتی مجسٹریٹ سے رابطہ کیا اور پولیس کے ایف آئی آر درج کرنے سے انکار کے بعد ہائی کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا۔ میوات کے ساتوں بریانی دکانداروں سے گوشت کے نمونے جمع کئے گئے ہیں جس کی سرکاری لیبارٹری میں تحقیقات کرائی جائے گی۔

First published: Nov 07, 2017 11:58 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading