ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

مرتھل گینگ ریپ معاملہ میں پہلی متاثرہ خاتون نے درج کرائی شکایت ، ایس آئی ٹی جانچ میں مصروف

نئی دہلی : ہریانہ کے مرتھل میں گینگ ریپ کے معاملے میں آخر کار پہلا معاملہ درج ہوا ہے۔ ایک خاتون نے ایس آئی ٹی کے پاس شکایت درج کرائی ہے ۔ نریلا کی رہنے والی خاتون کا کہنا ہے کہ 22-23 فروری کی رات میں اس کے ساتھ زیادتی ہوئی ہے ۔اس نے اپنے ہی 6 رشتہ داروں کے خلاف الزام لگایا ہے ۔ ہریانہ پولیس کی ایس آئی ٹی نے معاملہ درج کر کے تحقیقات شروع کر دی ہے ۔ تاہم ابھی اس بات کی تصدیق نہیں ہوئی ہے کہ یہ مرتھل کے واقعات سے ہی وابستہ ہے ۔

  • Pradesh18
  • Last Updated: Feb 28, 2016 10:23 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
مرتھل گینگ ریپ معاملہ میں پہلی متاثرہ خاتون نے درج کرائی شکایت ، ایس آئی ٹی جانچ  میں مصروف
نئی دہلی : ہریانہ کے مرتھل میں گینگ ریپ کے معاملے میں آخر کار پہلا معاملہ درج ہوا ہے۔ ایک خاتون نے ایس آئی ٹی کے پاس شکایت درج کرائی ہے ۔ نریلا کی رہنے والی خاتون کا کہنا ہے کہ 22-23 فروری کی رات میں اس کے ساتھ زیادتی ہوئی ہے ۔اس نے اپنے ہی 6 رشتہ داروں کے خلاف الزام لگایا ہے ۔ ہریانہ پولیس کی ایس آئی ٹی نے معاملہ درج کر کے تحقیقات شروع کر دی ہے ۔ تاہم ابھی اس بات کی تصدیق نہیں ہوئی ہے کہ یہ مرتھل کے واقعات سے ہی وابستہ ہے ۔

نئی دہلی : ہریانہ کے مرتھل میں گینگ ریپ کے معاملے میں آخر کار پہلا معاملہ درج ہوا ہے۔  ایک خاتون نے ایس آئی ٹی کے پاس شکایت درج کرائی ہے ۔ نریلا کی رہنے والی خاتون کا کہنا ہے  کہ 22-23 فروری کی رات میں اس کے ساتھ زیادتی ہوئی ہے ۔اس نے اپنے ہی 6 رشتہ داروں کے خلاف الزام لگایا ہے ۔ ہریانہ پولیس کی ایس آئی ٹی نے معاملہ درج کر کے تحقیقات شروع کر دی ہے ۔ تاہم ابھی اس بات کی تصدیق نہیں ہوئی ہے کہ یہ مرتھل کے واقعات سے ہی وابستہ ہے ۔


واضح رہے کہ ابھی تک ریاستی حکومت کے ساتھ ساتھ پولیس بھی مرتھل میں گینگ ریپ  شا واقعہ کو نہ مانتے ہوئے جانچ رپورٹ کا انتظار کر رہی تھی ۔ اس معاملے میں کئی عینی بھی شاہدین بھی سامنے آ چکے ہیں ، لیکن کئی دن گزر جانے کے بعد اب ایک خاتون  کے سامنے آنے سے پورا معاملہ پھر گرما گیا ہے ۔


اس سے پہلے ہائی کورٹ نے بھی پولیس کے رویے پر سوالیہ نشان کھڑے کئے تو وہیں سختی دکھاتے ہوئے حکومت سے کیس میں تفصیلی رپورٹ بھی طلب کی تھی ۔ کورٹ نے تشویش کا اظہار  کرتے ہوئے کہا تھا کہ ریاست میں بیٹیاں محفوظ  نہیں ہیں۔

First published: Feb 28, 2016 10:23 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading