உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    رگھو رام راجن پر پہلی مرتبہ پی ایم مودی نے توڑی خاموشی، بتایا انتظامی معاملہ

    نئی دہلی: حکمران بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے اندر سے ہی ریزرو بینک گورنر رگھو رام راجن کوہٹائے جانے کے مطالبہ کے درمیان وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ ان کی (مسٹر راجن) دوبارہ تقرری انتظامی امور کا معاملہ ہے اور اسے میڈیا میں مسئلہ نہیں بنایا جانا چاہئے۔

    نئی دہلی: حکمران بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے اندر سے ہی ریزرو بینک گورنر رگھو رام راجن کوہٹائے جانے کے مطالبہ کے درمیان وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ ان کی (مسٹر راجن) دوبارہ تقرری انتظامی امور کا معاملہ ہے اور اسے میڈیا میں مسئلہ نہیں بنایا جانا چاہئے۔

    نئی دہلی: حکمران بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے اندر سے ہی ریزرو بینک گورنر رگھو رام راجن کوہٹائے جانے کے مطالبہ کے درمیان وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ ان کی (مسٹر راجن) دوبارہ تقرری انتظامی امور کا معاملہ ہے اور اسے میڈیا میں مسئلہ نہیں بنایا جانا چاہئے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی: حکمران بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے اندر سے ہی ریزرو بینک گورنر رگھو رام راجن کوہٹائے جانے کے مطالبہ کے درمیان وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ ان کی (مسٹر راجن) دوبارہ تقرری انتظامی امور کا معاملہ ہے اور اسے میڈیا میں مسئلہ نہیں بنایا جانا چاہئے۔
      بی جے پی لیڈر سبرامنیم سوامی نے مسٹر راجن کو ذہنی طور پرہندوستانی نہیں بتاتے ہوئے انہیں ہٹانے کے لئے پھر سے وزیر اعظم کو خط لکھا ہے. انہوں نے یہ بھی الزام لگایا ہے کہ ڈاکٹر راجن نے حساس مالی اطلاعات کادنیا کے ساتھ اشتراک کیا ہے۔
      مسٹر مودی نے وال اسٹریٹ جرنل کے ساتھ بات چیت میں کہا کہ میرا خیال ہے کہ یہ انتظامی امور کا معاملہ ہے اور اس کو میڈیا کے ذریعے طے نہیں کیا جا سکتا ۔ ڈاکٹر راجن پر مسلسل ہو رہے حملوں کے درمیان وزیر اعظم کی جانب سے یہ پہلا تبصرہ ہے ۔ مسٹر مودی سے پوچھا گیا تھا کہ کیا وہ ریزرو بینک کے گورنر کے طور پر ڈاکٹر راجن کی دوبارہ تقرری کی حمایت کرتے ہیں؟
      وزیر اعظم نے اسے انتظامی امور کا معاملہ قرار دینے کے علاوہ یہ بھی کہا کہ ڈاکٹر راجن کی دوبارہ تقرری کا معاملہ ستمبر میں آئے گا اور اس وقت اس پر فیصلہ ہوگا.
      بی جے پی کے صدر امت شاہ نے مودی حکومت کی دو سال کی مدت مکمل ہونے کے موقع پر آج پریس کانفرنس میں اس بارے میں پوچھے گئے سوال پر کوئی تبصرہ نہیں کیا اور کہا کہ اس مسئلے پر پارٹی کی رائے کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔
      اس سے قبل کل وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے بھی اس پر تبصرہ کرنے سے انکار کر دیا تھا. انہوں نے کہا تھا کہ وہ ریزرو بینک سمیت کسی کے خلاف نجی تبصرہ کے حق میں نہیں ہیں۔ خیال رہے کہ ڈاکٹر راجن کی تین سالہ مدت کار اس سال ستمبر میں ختم ہو رہی ہے۔
      First published: