ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

15 دن سے بھوک سے تڑپ رہے تھے بچے، نہیں برداشت کر پایا تو مزدور نے لگا لی پھانسی

پڑوسیوں اور رشتہ داروں نے بتایا کہ وجئے کے کنبے کو کئی دنوں سے بھر پیٹ کھانا نہیں ملا تھا۔ اس بےبسی سے نجات پانے کے لئے اس نے یہ انتہائی قدم اٹھاتے ہوئے بدھ کی شام کو پھانسی لگا لی۔

  • Share this:
15 دن سے بھوک سے تڑپ رہے تھے بچے، نہیں برداشت کر پایا تو مزدور نے لگا لی پھانسی
علامتی تصویر

کانپور۔ کووڈ۔ 19 (COVID-19) سے نمٹنے کے لئے ڈیڑھ ماہ سے زیادہ مدت سے ملک بھر میں لاک ڈاون (lockdown) نافذ ہے۔ اس لاک ڈاون کی سب سے زیادہ مار غریبوں اور مزدوروں پر پڑ رہی ہے۔ روز کمانے والے مزدوروں کے سامنے بھکمری کی صورت حال پیدا ہو گئی ہے۔ ایسی ہی صورت حال کانپور کے رہنے والے ایک مزدور کے سامنے کھڑی ہو گئی۔ کام نہیں ملنے سے کاکادیو تھانہ علاقے کے راجاپورا کے ایک مزدور کے گھر میں بچوں کے کھانے کے لئے کچھ بھی نہیں تھا۔ بچے کبھی پانی پی کر تو کبھی بغیر کچھ کھائے ہی سو جاتے۔ اس سے نجات پانے کے لئے مزدور نے خودکشی (Suicide) کر لی۔


کنبے میں ہیں چھ ارکان


ایسی صورت حال میں مزدور نے کام پانے کی بہت کوشش کی لیکن اسے کام نہیں ملا۔ وہ پندرہ دن سے اپنے بچوں کو بھوکا دیکھ کر اندر سے ٹوٹ چکا تھا۔ اس کے بعد اس نے پھانسی لگا کر اپنی زندگی ختم کر لی۔ اس مزدور کا نام وجئے بہادر (40) ہے۔ اس کا پیشہ مزدوری کرنا تھا۔ مزدوری کر کے ہی وہ بیٹوں شیوم، شبھم، روی، بیٹی انوشکا اور اہلیہ رنبھا کا پیٹ بھرتا تھا۔


علامتی تصویر

لاک ڈاون کے ڈیڑھ مہینہ طول کھنچنے کی وجہ سے مزدور کی معاشی حالت خراب ہوتی گئی۔ مزدوروں کی صورت حال اتنی اچھی نہیں ہوتی کہ وہ بغیر کمائے زیادہ دن تک اپنے کنبے کا خرچ چلا سکیں۔ پڑوسیوں اور رشتہ داروں نے بتایا کہ وجئے کے کنبے کو کئی دنوں سے بھر پیٹ کھانا نہیں ملا تھا۔ اس بےبسی سے نجات پانے کے لئے اس نے یہ انتہائی قدم اٹھاتے ہوئے بدھ کی شام کو پھانسی لگا لی۔ گھر پہنچی بیوی نے پڑوسیوں کی مدد سے وجے کو پھندے سے اتار کر ہیلٹ میں بھرتی کرایا جہاں دیر رات اس کی موت ہو گئی۔
First published: May 15, 2020 02:10 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading