ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سی اے اے کی مخالفت پر بولے وزیر خارجہ۔ ’ ایک ایسا ملک بتائیں جہاں سب کا خیرمقدم ہوتا ہو‘

جے شنکر نے ایک پروگرام میں کہا ’ ہر کوئی شہریت کو ایک تناظر میں دیکھتا ہے، مجھے کوئی بھی ایسا ملک بتائیں جو کہتا ہو کہ دنیا کے ہر شخص کا وہاں خیرمقدم ہے‘۔

  • Share this:
سی اے اے کی مخالفت پر بولے وزیر خارجہ۔ ’ ایک ایسا ملک بتائیں جہاں سب کا خیرمقدم ہوتا ہو‘
وزیر خارجہ ایس جے شنکر

نئی دہلی۔ وزیر خارجہ ایس جے شنکر ( External Affairs Minister S Jaishankar) نے شہریت ترمیمی قانون (CAA) کی مخالفت کرنے والوں کو دو ٹوک جواب دیا ہے۔ جے شنکر نے ایک پروگرام میں کہا ’ ہر کوئی شہریت کو ایک تناظر میں دیکھتا ہے، مجھے کوئی بھی ایسا ملک بتائیں جو کہتا ہو کہ دنیا کے ہر شخص کا وہاں خیرمقدم ہے‘۔ عالمی پناہ گزینوں کے مسئلہ کی طرف اشارہ کرتے ہوئے جے شنکر نے کہا ’ ہم نے سی اے اے کے ذریعہ وطن سے محروم لوگوں کی تعداد گھٹانے کی کوشش کی ہے، اس کی تعریف ہونی چاہئے‘۔ انہوں نے پارلیمنٹ کے اختیار کا ذکر کرتے ہوئے کہا ’ کوئی بھی یہ نہیں کہہ سکتا کہ حکومت یا پارلیمنٹ کے پاس شہریت کی شرطیں مقرر کرنے کا اختیار نہیں ہے۔ ہر حکومت نے یہ کیا ہے‘۔



وہیں، سی اے اے کے خلاف اقوام متحدہ کی حقوق انسانی کونسل (UNHRC) کے ذریعہ سپریم کورٹ میں دائر کردہ ایک درخواست کے سلسلہ میں وزیر خارجہ نے ادارہ کے ڈائریکٹر کے ذریعہ جموں وکشمیر پر دئیے بیان کا ذکر کرتے ہوئے کہا۔’ یو این ایچ آر سی کے ڈائریکٹر پہلے بھی غلط ہو چکے ہیں‘۔ انہوں نے کہا کہ ’ یو این ایچ آر سی سرحد پار کی دہشت گردی کے معاملوں کے ارد گرد گھومتا رہتا ہے جیسے کہ اس کے ٹھیک بغل کے ملک سے کوئی لینا دینا نہیں ہے‘۔ وزیر خارجہ نے کہا ’ برائے مہربانی سمجھنے کی کوشش کریں کہ ان کا تعلق کہاں سے ہے۔ یو این ایچ آر سی کے ریکارڈ کو دیکھیں کہ وہ ماضی میں کشمیر مسئلہ سے کیسے نمٹے ہیں‘۔
First published: Mar 07, 2020 05:05 PM IST