اپنا ضلع منتخب کریں۔

    صرف جنگجوؤں کو مارنے سے جموں و کشمیر کا مسئلہ حل نہیں ہو گا: عمرعبداللہ

    عمرعبداللہ: فائل فوٹو

    عمرعبداللہ: فائل فوٹو

    سابق وزیراعلیٰ نے صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ جموں وکشمیرمیں سیاسی صورتحال کو درست کرنے کی ضرورت ہے اورایک سیاسی پہل کرنے کی ضرورت ہے، ریاست کے حالات خود بخود ٹھیک ہوجائیں گے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      جموں: نیشنل کانفرنس کے نائب صدراورسابق وزیراعلی عمرعبداللہ نے کہا کہ جنگجوؤں کو مارنے سے جموں و کشمیرکا مسئلہ حل نہیں ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ دفعہ 35 اے پرنیشنل کانفرنس کے موقف میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے اورپارٹی کی لیگل ٹیم 35 اے کے دفاع کے لئے اپنا کردار ادا کرے گی۔

      عمرعبداللہ نے یہاں جموں میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ جموں وکشمیرمیں سیاسی صورتحال کو درست کرنے کی ضرورت ہے اورایک سیاسی پہل کرنے کی ضرورت ہے، ریاست کے حالات خود بخود ٹھیک ہوجائیں گے۔ انہوں نے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) اورپیپلز ڈیموکریٹک پارٹی (پی ڈی پی) کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ان جماعتوں کے دور اقتدار میں جنگجوؤں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے، لیکن جنگجوؤں کو مارنے سے جموں ہی جموں وکشمیر کا مسئلہ حل نہیں ہو گا۔

      سابق وزیراعلیٰ کا کہنا تھا 'کوئی کہتا ہے، میں نے 1500 جنگجو مارے، کوئی کہتا ہے میں نے 1700 سوجنگجو مارے اورکوئی کہتا ہے میں نے 300 جنگجو مارے۔ آپ کو مارنے پڑ رہے ہیں کیونکہ کہ آپ کے وقت میں ہی یہ جنگجو پیدا ہوئے ہیں، ہمارے وقت حالات ایسے بنے کہ جنگجو پیدا ہی نہیں ہوئے اور ہمیں جنگجوؤں کے خلاف کارروائی کرنی ہی نہیں پڑی، آج آپ کی مجبوری بن رہی ہے کہ آپ کو جنگجوؤں کومارنا پڑ رہا ہے۔

      نیشنل کانفرنس کے نائب صدرنےکہا کہ صرف جنگجوؤں کو مارنے سے جموں وکشمیرکا مسئلہ حل نہیں ہو گا، آپ کی فوج بھی کہتی ہے کہ اس کے لئے سیاسی پہل کرنے کی ضرورت ہے، آپ جتنے جنگجو ماروگے اتنے اورپیدا ہوں گے۔ آپ کوجموں وکشمیرکی سیاسی صورتحال کو درست کرنے ہوگا ، باقی سب کچھ ٹھیک ہوجائے گا۔ دفعہ35 اے پر پوچھے گئےسوال کے جواب میں انہوں نےکہا "دفعہ 35 اے پرہمارے موقف میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے، ہم نے اپنی لیگل ٹیم تیارکی ہے، جو دفعہ 35 اے  کا دفاع کرنے کے لئے  اپنا اہم کردار ادا کرے گی"۔ 
      First published: