ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

آتشی کویہودی کہنے والے کانگریس کےسابق ممبراسمبلی آصف محمد خان اپنے اسٹینڈ پرقائم

مشرقی دہلی سے عام آدمی پارٹی کی امیدوار آتشی کویہودی بتانے والے کانگریس کے سابق ممبر اسمبلی نےکہا کہ کیجریوال کے کہنے اورکرنے میں فرق ہے، اسے ہم عوام کے درمیان لا رہے ہیں۔

  • Share this:
آتشی کویہودی کہنے والے کانگریس کےسابق ممبراسمبلی آصف محمد خان اپنے اسٹینڈ پرقائم
آتشی: فائل فوٹو

مشرقی دہلی سے عام آدمی پارٹی کی امیدوارآتشی کویہودی بتانے والےاوکھلا سےکانگریس کےسابق ممبراسمبلی آصف محمد خان نےکہا کہ میں ابھی بھی اپنے اسٹینڈ پرقائم ہوں۔ کیجریوال کےکہنےاورکرنےمیں فرق ہے، ہم اسےعوام کے درمیان میں لارہے ہیں۔ ان کے لیڈررہےآشوتوش کوگپتا لگانےکےلئےمجبورکیا گیا جبکہ آتشی کےنام سےمارلینا ہٹانےکا دباوڈلوایا گیا۔


انہوں نےکہا کہ مجھے یہ جاننےکا حق ہےچارماہ پہلےہورڈنگ میں مارلینا لگایا تھا، لیکن اب آتشی ہیں۔ ایسا کیوں ہے؟ اروندرسنگھ لولی سردارہیں تووہ پگڑی پہنتے ہیں۔ میں آصف محمد خان ہوں تومیں ہندوعلاقوں میں جاتا ہوں توآصف ہی لکھتا ہوں۔ اگرآتشی سنگھ ہیں توانہیں نامزدگی میں بھی سنگھ لکھنا چاہئےتھا، مارلینا کیوں لکھا، یہ ڈبل اسٹینڈرڈ ہے۔


آصف محمد خان نے کہا کہ ایک ماہ سےسوشل میڈیا پریہ بات چل رہی ہےکہ وہ ڈاوٹ فل کیرکٹرہیں۔ کہیں وہ عیسائی بنتی ہے، کہیں یہودی اورکہیں سنگھ  بنتی ہیں۔ کیجریوال بھی بی جے پی آرایس ایس کی طرح مذہب اورذات میں الجھا دیا جائے۔ پارٹی کو واضح کرنا چاہئے کہ اگرانہوں نےمارلینا نامزدگی میں بھرا ہے، توانہیں عوام کے درمیان میں بھی مارلینا لکھنا چاہئے۔ منیش سسودیا انہیں آتشی سنگھ بتاتےہیں، لیکن وہ خود آتشی لکھتی ہیں۔ یہ ڈبل اسٹینڈرڈ ہم عوام کےدرمیان میں لےکرآئے ہیں۔


واضح رہےکہ اوکھلا میں کانگریس امیدواراروندرسنگھ لولی کی موجودگی میں آصف محمد خان نےکہا کہ ملک میں ہندو، مسلم، سکھ اورعیسائی ہی رہتے ہیں۔ آتشی یہودی ہیں، یہودی کوووٹ دینا ہمارے مذہب کےخلاف ہے۔ اس پرعام آدمی پارٹی کےلیڈروں کا کہنا ہے کہ اس معاملےکولےکرالیکشن کمیشن کوبھی شکایت دی جائے گی۔
First published: Apr 28, 2019 09:57 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading