ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اصلاحات کے دعووں کے باوجود اقتصادی ترقی کی رفتار ہوئی سست

حکومت کی اقتصادی سرگرمیوں کو رفتار دینے کے لئے کئے جانے والے اصلاحات کے باوجود رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں ملک کے مجموعی گھریلو مصنوعات کی ترقی کی شرح 7.1 فیصد رہی ہے

  • UNI
  • Last Updated: Aug 31, 2016 08:18 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
اصلاحات کے دعووں کے باوجود اقتصادی ترقی کی رفتار ہوئی سست
حکومت کی اقتصادی سرگرمیوں کو رفتار دینے کے لئے کئے جانے والے اصلاحات کے باوجود رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں ملک کے مجموعی گھریلو مصنوعات کی ترقی کی شرح 7.1 فیصد رہی ہے

نئی دہلی : حکومت کی اقتصادی سرگرمیوں کو رفتار دینے کے لئے کئے جانے والے اصلاحات کے باوجود زراعت، کان اور کان کنی اور تعمیرات جیسے شعبوں کی سرگرمیوں کے سست پڑنے سے رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں ملک کے مجموعی گھریلو مصنوعات ( جی ڈی پی) کی ترقی کی شرح 7.1 فیصد رہی ہے جبکہ گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں یہ 7.5 فیصد رہی تھی۔

مرکزی شماریات کے دفتر کی طرف سے آج جاری اعداد و شمار کے مطابق 30 جون کو ختم شدہ پہلی سہ ماہی میں جی ڈی پی ترقی کی شرح 7.1 فیصد اور مجموعی افزائش قدر (جي وي اے) ترقی کی شرح 7.3 فیصد رہی ہے۔ گزشتہ مالی سال کے ابتدائی اعداد و شمار میں پہلی سہ ماہی میں ترقی کی شرح 7.0 فیصد رہی تھی جو بعد میں گئے جائزے میں 7.5 فیصد پر پہنچ گئی۔

اعداد و شمار کے مطابق پہلی سہ ماہی میں جن سیکٹروں کی ترقی کی شرح سات فیصد سے زیادہ رہی ہے ان میں مینوفیکچرنگ، بجلی، گیس، پانی کی فراہمی اور دوسری یوٹیلٹی امکانات، کاروبار، ہوٹل، نقل و حمل، مواصلات، خزانہ، انشورنس، ریئل اسٹیٹ، پیشہ ورانہ امکانات اور نشریات سے منسلک امکانات شامل ہیں۔ اس مدت میں زراعت، جنگلات اور ماہی پروری کے شعبے کی ترقی کی شرح 1.8 فیصد رہی جبکہ سال16۔ 2015 کی پہلی سہ ماہی میں یہ سیکٹر 2.6 فیصد کی شرح سے بڑھے تھے۔ تعمیراتی سیکٹر 1.5 فیصد کی شرح سے بڑھا ہے جبکہ کان اور کان کنی کے شعبے کی ترقی کی شرح 0.4 فیصد منفی رہی۔

First published: Aug 31, 2016 08:18 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading