உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہندوسینا کی غلام علی کی پھر مخالفت ، نہیں ہوسکا گھر واپسی کا میوزک لانچ

    نئی دہلی: مشہور ومقبول پاکستانی غزل گائک غلام علی کی اداکاری والی صہیب الیاسی کی فلم گھرواپسی کا میوزک لانچ پروگرام آج ہندوسینا کی دھمکی کی وجہ سے ایک مرتبہ پھر نہیں ہوسکا۔

    نئی دہلی: مشہور ومقبول پاکستانی غزل گائک غلام علی کی اداکاری والی صہیب الیاسی کی فلم گھرواپسی کا میوزک لانچ پروگرام آج ہندوسینا کی دھمکی کی وجہ سے ایک مرتبہ پھر نہیں ہوسکا۔

    نئی دہلی: مشہور ومقبول پاکستانی غزل گائک غلام علی کی اداکاری والی صہیب الیاسی کی فلم گھرواپسی کا میوزک لانچ پروگرام آج ہندوسینا کی دھمکی کی وجہ سے ایک مرتبہ پھر نہیں ہوسکا۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی: مشہور ومقبول پاکستانی غزل گائک غلام علی کی اداکاری والی صہیب الیاسی کی فلم گھرواپسی کا میوزک لانچ پروگرام آج ہندوسینا کی دھمکی کی وجہ سے ایک مرتبہ پھر نہیں ہوسکا۔ وی رائل پلازہ ہوٹل میں غلام علی کے ہاتھوں سابق ممبر پارلیمنٹ امرسنگھ اور عام آدمی پارٹی کے لیڈر اور شاعر کمار وشواس کی موجودگی میں گھرواپسی کا میوزک لانچ ہونا تھا لیکن پہلے کٹر ہندو تنظیموں کی مخالفت اور پھر ہوٹل کی انتظامیہ کی جانب سے اس کی اجازت نہ دیئے جانے کی وجہ سے اسے رد کرنا پڑا۔
      قبل ازیں فروری میں بھی شیوسینا کے احتجاج کی وجہ سے ممبئی میں اس فلم کے میوزک لانچ کے پروگرام کو منسوخ کردیا گیا تھا۔ اس میوزک ریلیز کے لئے پولس نے ہر طرح کا حفاظتی بندوبست کیا تھا لیکن پھر بھی غلام علی کی مخالفت میں ہوٹل کے باہر کچھ لوگ جمع ہوگئے جنہیں بعد میں پولس نے وہاں سے ہٹادیا۔
      فلم کے خالق اور ہدایت کار صہیب الیاسی نے فلم کا میوزک لانچ رد ہونے پر ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ وشو ہندو پریشد اور کچھ دیگر کٹر تنظیموں کی مخالفت کی وجہ سے ہوٹل نے ہمیں پروگرام کرنے کی اجازت نہیں دی، اگر ملک کی راجدھانی میں ایسا ماحول ہے تو بے حد دکھ کی بات ہے۔
      حالانکہ ہوٹل انتظامیہ نے فون پر دھمکی ملنے کی بات کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ پروگرام کرنے والوں نے ہمیں غلام علی کے بارے میں کوئی اطلاع نہیں دی تھی۔ہوٹل نے گلوکار کو سیکورٹی فراہم کرنے سے انکار کردیا۔ ان تمام تنازعات کے درمیان غلام علی تو راستہ سے واپس چلے گئے لیکن امرسنگھ ضرور وہاں پہنچ گئے۔ تاہم انہیں بھی ہوٹل میں داخلہ کی اجازت نہیں ملی۔
      امرسنگھ نے کہا کہ غلام علی اور لتا منگیشکر جیسے فنکاروں کو کوئی سرحد اور مذہب کی دیوار نہیں روک سکتی۔ غلام علی کی آواز ہندوسینا اور بجرنگ دل جیسی تنظیموں کی محتاج نہیں۔ اگر وہ اپنا پروگرام کرتے ہیں تو اس سے کسی کو وقار کو ٹھیس نہیں پہنچتی۔ یہ مخالفت سستی مقبولیت کے لئے کیا جارہا ہے۔ پچھلے سال بھی شیوسینا کی دھمکیوں کی وجہ سے غلام علی کے کئی پروگرام منسوخ ہوئے تھے۔
      First published: