உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Azan: مساجد میں لاؤڈ اسپیکر پر پابندی کا مطالبہ، گوا کے ہندوتوا گروپ نے اٹھایا مسئلہ

    Youtube Video

    پولیس کو یہ بھی ہدایت دی گئی ہے کہ وہ مذکورہ مساجد پر باقاعدہ نظر رکھیں اور اس بات کو یقینی بنائیں کہ وہ مذکورہ حکم کی تعمیل کریں۔ ہندو جنجاگرتی سمیتی نے دعویٰ کیا کہ ان ہدایات کے باوجود گوا کی مساجد سے اذان کے لیے لاؤڈ اسپیکر کے استعمال سے شور کا مسئلہ جاری ہے۔

    • Share this:
      گوا میں قائم دائیں بازو کے گروپ نے منگل کے روز 'اذان' (Azan) یا اسلامی نماز کی اذان کے لیے مساجد میں لاؤڈ اسپیکر کے استعمال کو روکنے کے لیے ایک انتظامی حکم کے نفاذ کا مطالبہ کیا۔ ہندو جنجاگرتی سمیتی (HJS) کے ایک وفد نے منگل کے روز شمالی گوا کے ضلع کلکٹر مامو ہاگے سے ملاقات کی اور ایک میمورنڈم پیش کیا۔

      ہندو جنجاگرتی سمیتی کے گوا کے کنوینر منوج سولنکی نے کہا کہ شمالی گوا کے ایڈیشنل کلکٹر نے 'اذان' کے لیے لاؤڈ اسپیکر کے غیر قانونی استعمال پر پابندی کے احکامات جاری کیے جب ہائی کورٹ کی گوا بنچ نے انتظامیہ کو مارچ 2021 میں ورون پرولکر کی طرف سے دائر کی گئی ایک عرضی کا نوٹس لینے کی ہدایت کی۔

      مزید پڑھیں: EXPLAINED: پاکستان میں سیاسی ہلچل کا باقی دنیا کے لیے کیا ہےمطلب؟ کیاعالمی سیاست ہوگی متاثر؟

      انہوں نے کہا کہ ہائی کورٹ نے شمالی گوا کے ایڈیشنل کلکٹر کو پریولکر کی شکایت کا ازالہ کرنے کی ہدایت دی ہے۔ ایڈیشنل ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ نے پرولکر کی شکایت سننے اور مساجد سے جواب طلب کرنے کے بعد یہ حکم جاری کیا تھا کہ مساجد کو متعلقہ اتھارٹی کی پیشگی اجازت کے بغیر لاؤڈ اسپیکر/پبلک ایڈریس سسٹم یا آواز پیدا کرنے والے کسی دوسرے آلات کا استعمال نہ کرنے کی ہدایت کی گئی تھی۔

      یہ بھی پڑھئے : کیا رمضان کے مہینہ میں میک اپ کرنے سے ٹوٹ جاتا ہے روزہ؟


      پولیس کو یہ بھی ہدایت دی گئی ہے کہ وہ مذکورہ مساجد پر باقاعدہ نظر رکھیں اور اس بات کو یقینی بنائیں کہ وہ مذکورہ حکم کی تعمیل کریں۔ ہندو جنجاگرتی سمیتی نے دعویٰ کیا کہ ان ہدایات کے باوجود گوا کی مساجد سے اذان کے لیے لاؤڈ اسپیکر کے استعمال سے شور کا مسئلہ جاری ہے۔

      ہندو جنجاگرتی سمیتی کا کہنا ہے کہ مساجد سے بلند ہونے والی اذان کی وجہ سے ہر کوئی بلا لحاظ مذہب و ملت اذان سننے پر مجبور ہے۔ یہ مذہب کی آزادی نہیں ہے۔ انہی اصولوں کو استعمال کرتے ہوئے اگر دیگر تمام مذاہب اپنے مذہبی مقامات پر لاؤڈ اسپیکر لگانا شروع کر دیں تو یہ ایک بڑا مسئلہ ہو جائے گا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: