உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Google: گوگل ہوا کرناٹک ہائی کورٹ سے رجوع، کمپیٹیشن کمیشن آف انڈیا کو جواب دینے مانگا وقت، آخر کیا ہے معاملہ؟

    ٹیک کمپنی نے اس بات پر زور دیا ہے کہ اس کی ادائیگیوں کی پالیسی نئی نہیں ہے

    ٹیک کمپنی نے اس بات پر زور دیا ہے کہ اس کی ادائیگیوں کی پالیسی نئی نہیں ہے

    گوگل کے ترجمان نے ایک ای میل میں کہا کہ ہم نے کرناٹک ہائی کورٹ میں سی سی آئی کے ذریعہ گوگل پلے کی تحقیقات میں عبوری ریلیف کی درخواست کے بارے میں ایک رٹ دائر کی ہے، جو طے شدہ عمل کے اصولوں کے مطابق آگے بڑھے گی۔

    • Share this:
      گوگل (Google) نے کرناٹک ہائی کورٹ میں ایک رٹ دائر کی ہے جس میں پلے اسٹور کے قوانین کی تحقیقات سے متعلق مسابقتی کمیشن کے سوالات کا جواب دینے کے لیے مزید وقت کی مانگ کی گئی ہے۔ گوگل نے کہا کہ وہ کمپیٹیشن کمیشن آف انڈیا (CCI) کے تفتیشی عمل کا احترام کرتا ہے اور منصفانہ تحقیقات کے لیے تعاون کرے گا، جو کہ خود کمپنی کے مفاد میں ہوگا۔

      گوگل کے ترجمان نے ایک ای میل میں کہا کہ ہم نے کرناٹک ہائی کورٹ میں سی سی آئی کے ذریعہ گوگل پلے کی تحقیقات میں عبوری ریلیف کی درخواست کے بارے میں ایک رٹ دائر کی ہے، جو طے شدہ عمل کے اصولوں کے مطابق آگے بڑھے گی۔ اس معاملے میں کمپنی کے موقف سے آگاہ ایک ذریعہ نے کہا کہ گوگل نے ہندوستان میں ڈویلپرز کے لیے پلے کے بلنگ سسٹم کے ساتھ ضم ہونے کی ٹائم لائن کو 31 اکتوبر 2022 تک بڑھا دیا ہے۔


      ذریعہ نے یہ بھی کہا کہ گوگل کا خیال ہے کہ ڈیڈ لائن کی رضاکارانہ توسیع سے الائنس آف ڈیجیٹل انڈیا فاؤنڈیشن (ADIF) کی طرف سے مانگی گئی ’’عبوری حکم امتناعی ریلیف‘‘ کی ضرورت ختم ہو جاتی ہے۔ اس لیے مزید وقت مانگا گیا ہے کیونکہ غیر ضروری جلد بازی کی کوئی وجہ نہیں ہے۔ گوگل نے شکایت کنندگان کی شناخت کے حوالے سے سی سی آئی سے مختلف طریقہ وار درخواستیں بھی طلب کی ہیں۔ جو اسے شکایت کا مناسب جواب دینے میں مدد کریں گی۔

      گوگل کا خیال ہے کہ سی سی آئی کو منصفانہ اور مکمل تحقیقات کے مفاد میں مناسب عمل کا مشاہدہ کرنا چاہیے۔  رواں مٹاہ کے شروع میں گوگل نے کہا تھا کہ وہ ہندوستان میں ڈویلپرز کے لیے اپنے پلے بلنگ سسٹم کے ساتھ ضم ہونے کی آخری تاریخ مارچ 2022 سے اگلے سال اکتوبر تک موخر کر رہا ہے۔ پچھلے سال اکتوبر میں کمپنی نے 31 مارچ 2022 کو ہندوستان میں ڈیولپرز کے لیے پلے کے بلنگ سسٹم کے ساتھ ضم ہونے کی آخری تاریخ کا اعلان کیا۔

      گوگل پلے بلنگ سسٹم کیا ہے؟

      ماضی میں ہندوستانی ڈویلپرز اور اسٹارٹ اپس نے گوگل کے پلے بلنگ سسٹم کے بارے میں خدشات کا اظہار کیا تھا۔ ان کا کہنا ہے کہ ٹیک کمپنی ہندوستانی ایپ ڈویلپرز/مالکان کو اپنے بلنگ سسٹم کو لازمی طور پر استعمال کرکے ڈیجیٹل خدمات فروخت کرنے پر مجبور نہیں کرسکتی ہے۔ گوگل نے پہلے کہا تھا کہ جو ایپس اپنے پلے اسٹور کے ذریعے ڈیجیٹل مواد فروخت کرنے کا انتخاب کرتے ہیں انہیں گوگل پلے بلنگ سسٹم کا استعمال کرنا ہوگا اور ان ایپ خریداری کا ایک فیصد بطور فیس ادا کرنا ہوگا۔ اس نے ضروری اپ ڈیٹس کو مکمل کرنے کے لیے 30 ستمبر 2021 تک کا وقت دیا تھا۔

      تاہم ہندوستان میں ڈویلپر کمیونٹی کے خدشات کے بعد اس نے آخری تاریخ 31 مارچ 2022 تک بڑھا دی تھی۔ ٹائم لائن کو اب اگلے سال اکتوبر تک بڑھا دیا گیا ہے۔ ٹیک کمپنی نے اس بات پر زور دیا ہے کہ اس کی ادائیگیوں کی پالیسی نئی نہیں ہے اور اس نے ہمیشہ ایسے ڈویلپرز سے مطالبہ کیا ہے جو اپنی ایپس کو پلے پر بھی ڈونلوڈ کرنے میں مدد دیتا ہے۔ اگر وہ ڈیجیٹل سامان کی ایپ کے اندر خریداری کی پیشکش کرتے ہیں تو وہ Google Play کا بلنگ سسٹم استعمال کریں۔
      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔

      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: