உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کشمیر کے 18 علیٰحدگی پسند لیڈروں اور 155 رہنماؤں اور سماجی کارکنوں کی سیکورٹی واپس

    سید علی شاہ گیلانی: فائل فوٹو

    سید علی شاہ گیلانی: فائل فوٹو

    وزارت داخلہ کے ترجمان کے مطابق ایسا محسوس کیا گیا کہ علیحدگی پسند لیڈروں کو تحفظ مہیا کرایا جانا ریاست کے وسائل کی بربادی ہے، انہیں اچھے کاموں پر خرچ کیا جا سکتا ہے

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      جموں و کشمیر حکومت نے 14 فروری کو پلوامہ میں ہوئے شدید دہشت گردانہ حملے کے بعد بڑا قدم اٹھاتے ہوئے یاسین ملک، سید علی شاہ گیلانی، سلیم گیلانی، مولوی عباس انصاری سمیت 18 علیحدگی پسند رہنماؤں کی سیکورٹی بدھ کو واپس لے لی۔ اس کے ساتھ ہی 155 رہنماؤں اور سماجی کارکنوں کی بھی سیکورٹی ہٹا دی گئی ہے۔
      وزارت داخلہ کے ترجمان کے مطابق ایسا محسوس کیا گیا کہ علیحدگی پسند لیڈروں کو تحفظ مہیا کرایا جانا ریاست کے وسائل کی بربادی ہے، انہیں اچھے کاموں پر خرچ کیا جا سکتا ہے۔
      ترجمان کے مطابق ایسا کرنے سے پولیس کو ایک ہزار سے زائد سیکورٹی فورس اور کم از کم 100 گاڑیاں مل گئی ہیں جنہیں سیکورٹی کے باقاعدہ کاموں میں لگایا جائے گا۔

      حکومت نے اس سے پہلے اتوار کو میر واعظ عمر فاروق اور شبیر شاہ سمیت پانچ علیحدگی پسند رہنماؤں کی سیکورٹی واپس لے لی تھی۔
      First published: