உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    گیانواپی میں شیولنگ کے دعوے کے بیچ Supreme Courtمیں آج سماعت، ہندو فریق نے جواب میں کہا، پوری املاک بھگوان کی

    Youtube Video

    Gyanvapi Mosque Case: انہوں نے کہا، "ہندوستان میں اسلامی حکومت سے ہزاروں سال پہلے جائیداد آدی وشویشور کی تھی۔ بھگوان کی جائیداد کسی کو نہیں دیی جا سکتی ہے۔ اورنگ زیب نے حکمران ہونے کے ناطے زبردستی قبضہ کر لیا تھا۔ اس سے مسلمانوں کو جائیداد کا حق نہیں مل جاتا ہے۔

    • Share this:
      Gyanvapi Masjid Case: گیانواپی مسجد کا سروے کرنے والی ٹیم نے جمعرات کو وارانسی کی عدالت میں اپنی رپورٹ پیش کی۔ تاہم سپریم کورٹ نے ان سے کہا کہ وہ ایک اور دن تک ان کی سماعت نہ کرے۔ دریں اثناء سپریم کورٹ میں آج اہم سماعت ہوگی۔ سماعت سے عین قبل، ہندو فریق نے ایک جواب داخل کیا ہے جس میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ ہندو صدیوں سے اسی مقام پر اپنی رسم و روایت پر عمل پیرا ہیں۔ اورنگ زیب نے کوئی وقف قائم نہیں کیا تھا۔ متنازعہ جگہ مسجد نہیں ہے۔
      انہوں نے کہا، "ہندوستان میں اسلامی حکومت سے ہزاروں سال پہلے جائیداد آدی وشویشور کی تھی۔ بھگوان کی جائیداد کسی کو نہیں دی جا سکتی ہے۔ اورنگ زیب نے حکمران ہونے کے ناطے زبردستی قبضہ کر لیا تھا۔ اس سے مسلمانوں کو جائیداد کا حق نہیں مل جاتا ہے۔
      عدالت عظمیٰ نے جمعرات کو ایک وکیل کے بیمار ہونے کی وجہ سے سماعت ملتوی کر دی۔ ہندو درخواست گزاروں کی نمائندگی کرنے والے ایک وکیل نے کہا کہ وارانسی کی عدالت اب 23 مئی کو سماعت جاری رکھے گی۔

      یہ بھی پڑھیں: Azam Khan Release: دو سال بعد جیل سے رہا ہوئے اعظم خان، اکھلیش نے ٹویٹ کر کہہ ڈالی بڑی بات

      مسجد کی انتظامی کمیٹی کے وکیل نے کہا کہ دونوں فریقین نے جمعرات کو ٹرائل کورٹ میں اپنے "اعتراض اور جوابی اعتراضات" دائر کیے ہیں۔ ان درخواستوں میں سے ایک جس کی اب 23 مئی کو سول کورٹ میں سماعت متوقع ہے، ایک عرضی ہے جس میں کاشی وشوناتھ مندر اور اس سے متصل گیاپواپی مسجد کے درمیان دیوار کو ہٹانے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

      بنگلورو: کیمپےگوڑاانٹرنیشنلAirportکوملی بم سےاڑانےکی دھمکی،سکیورٹی ایجنسیاں جانچ میں مصروف
      انجمن انتظامیہ مساجد وارانسی نے کیا نمازیوں کو آگاہ ۔۔
      انجمن انتظامیہ مساجد وارانسی نے نماز کے لئے آنے والے لوگوں سے  گھر سے وضو کرکے آنے کی اپیل کی ہے۔  یہ خصوصی ہدایات پنجگانہ نمازوں کے ساتھ ساتھ جمعے کی نماز کے لئے بھی جاری کی گئی ہیں۔ مقامی عدالت کے ذریعے شاہی مسجد گیان واپی کا وضوخانہ سیل کیے جانے کے بعد نمازیوں کے لئے وضو کی دقّت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ وضو خانہ اور استنجا خانہ  بھی سیل کئے گئے خطے میں آنے کے سبب نمازیوں کے لئے دشواریاںپیش آرہی ہیں۔ لہٰذا فی الحال لوگ گھر سے ہی نماز کے لئے  وضو کرکے آئیں ۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: