ہوم » نیوز » No Category

یعقوب میمن اور افضل گرو کی پھانسی کے پیچھے سیاسی محرکات کارفرما تھے : جسٹس اے پی شاہ

نئی دہلی: دہلی ہائی کورٹ کے سابق چیف جسٹس اے پی شاہ نے کہا ہے کہ پارلیمنٹ حملے کے مجرم افضل گرو اور 1993 ممبئی سلسلہ وار بم دھماکوں کے مجرم یعقوب میمن کی پھانسی کے پیچھے سیاسی محرکات کار فرما تھے ۔

  • CNN-IBN
  • Last Updated: Sep 04, 2015 01:45 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
یعقوب میمن اور افضل گرو کی پھانسی کے پیچھے سیاسی محرکات کارفرما تھے : جسٹس اے پی شاہ
نئی دہلی: دہلی ہائی کورٹ کے سابق چیف جسٹس اے پی شاہ نے کہا ہے کہ پارلیمنٹ حملے کے مجرم افضل گرو اور 1993 ممبئی سلسلہ وار بم دھماکوں کے مجرم یعقوب میمن کی پھانسی کے پیچھے سیاسی محرکات کار فرما تھے ۔

نئی دہلی: دہلی ہائی کورٹ کے سابق چیف جسٹس اے پی شاہ نے کہا ہے کہ پارلیمنٹ حملے کے مجرم افضل گرو اور 1993 ممبئی سلسلہ وار بم دھماکوں کے مجرم یعقوب میمن کی پھانسی کے پیچھے سیاسی محرکات کار فرما تھے ۔


سی این این آئی بی این سے خصوصی بات چیت میں لاء کمیشن کے سابق چیئرمین نے کہا کہ افضل کے معاملے میں انتظامیہ کی جانب سے رکاوٹ کھڑا کی گئی جبکہ میمن کی رحم کی درخواست کو منظور کئے جانے کیلئے کچھ بنیادیں باقی تھیں۔


ایک سوال کے جواب میں سابق چیف جسٹس نے کہا سپریم کورٹ کے ججوں کے درمیان نظریاتی اختلافات تھے اور اس کے بعد اس معاملے کو سپریم کورٹ کی تین ججوں کی بینچ کو بھیجا گیا ۔ جسٹس شاہ نے یہ بھی کہا کہ رحم کی درخواست مسترد ہونے کے بعد کسی بھی شخص کو 14 دن کا وقت دیا جاتا ہے۔


انہوں نے یہ بھی کہا کہ یعقوب کا کیس اس کی زندہ مثال ہے، جہاں پورے پروسیجر پر عمل نہیں کیا گیا تھا ۔جس طرح سے اس کیس کو نمٹا گیا، اس وہ بھی الجھن میں تھے ۔ وہیں افضل کے کیس سے متعلق جسٹس شاہ نے کہا کہ اس کی بھی رحم کی درخواست کافی طویل عرصے سے التوا میں رکھی گئی تھی اور پھر حکومت نے اچانک اسے 'پھانسی پر لٹکانے کا فیصلہ کیا۔


انہوں نے کہا کہ حکومت نے ان معاملات میں جلدبازی میں قدم اٹھایااور اس کارروائی کے پیچھے سیاسی عوامل کار فرما تھے ۔ جسٹس شاہ نے اس بات سے اتفاق کیا کہ جج بھی سیاست سے متاثر ہوتے ہیں، جو کبھی کبھی ان کی طرف سے دئے گئے فیصلوں میں ظاہر بھی ہوتا ہے۔

First published: Sep 04, 2015 01:44 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading