உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دھرم سنسد میں Hate Speech کے معاملہ کو پر سپریم کورٹ میں سماعت کل

    دھرم سنسد میں Hate Speech کے معاملہ کو پر سپریم کورٹ میں سماعت کل

    دھرم سنسد میں Hate Speech کے معاملہ کو پر سپریم کورٹ میں سماعت کل

    گزشتہ ماہ ہریدوار میں منعقد دھرم سنسد (Haridwar Dharm Sansad) میں نفرت انگیز تقریر کے معاملے پر مرکزی اور ریاستی حکومتوں کی خاموشی کے خلاف سپریم کورٹ (Supreme Court) میں داخل کی گئی عرضیوں پر کل سماعت ہونے والی ہے۔

    • Share this:
    نئی دہلی : گزشتہ ماہ ہریدوار میں منعقدہ دھرم سنسد (Haridwar Dharm Sansad) میں نفرت انگیز تقریر کے معاملہ پر مرکزی اور ریاستی حکومتوں کی خاموشی کے خلاف سپریم کورٹ (Supreme Court) میں داخل کی گئی عرضیوں پر کل سماعت ہونے والی ہے ۔ جس پر ہندوستان کے ساتھ ساتھ پوری دنیا کی نگاہیں ہوں گی ۔ بدھ کو سپریم کورٹ میں یہ سماعت چیف جسٹس این وی رمنا، جسٹس سوریہ کانت اور جسٹس ہیما کوہلی کی بنچ کرے گی۔ اس معاملہ کو لے کر ملک بھر میں کافی ہنگامہ ہوا تھا اور اس معاملہ میں ہریدوار پولیس نے وسیم رضوی عرف جتیندر نارائن تیاگی  (Wasim Rizvi aka Jitendra Tyagi) اور دیگر کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا ۔ تاہم نفرت کی دھرم سنسد میں اعلانیہ ہندوستانی مسلمانوں کے قتل عام کیلئے اکسانے والے اور نفرت انگیز بیان دینے والے سادھو سنتوں کے خلاف واضح طور پر کوئی کارروائی نہیں کی گئی اور نہ ہی کوئی گرفتاری ہوئی ۔

    خاص طور پر مسلسل زہر افشانی کر رہے یتی نرسنگھانند سرسوتی سمیت کئی سنتوں کے خلاف گرفتاری جیسی کارروائیاں نہیں ہوئیں ، جس کے بعد جمعیت علماء ہند کے دونوں گروپ مولانا محمود مدنی اور مولانا ارشد مدنی گروپ کی جانب سے سپریم کورٹ سے رجوع کیا گیا ۔ ساتھ ہی معروف وکیل کپل سبل کے ذریعج بھی صحافی قربان علی  اور پٹنہ ہائی کورٹ کی سابق جج انجنا پرکاش کے ذریعہ بھی سپریم کورٹ میں مفاد عامہ کی عرضی داخل کرتے ہوئے اس سلسلہ میں نوٹس لینے اور قرار واقعی کارروائی کرنے کی کا مطالبہ کیا گیا ہے ۔ ساتھ ہی عرضی میں ایس آئی ٹی سے آزادانہ، معتبر اور منصفانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا گیا تھا ۔

    غورطلب ہے کہ دسمبر میں وید نکیتن، کھرکڑی میں دھرم سنسد کا انعقاد کیا گیا تھا، جس میں کچھ مقررین نے نفرت انگیز تقریریں کی تھیں۔ اس کے ویڈیوز سوشل میڈیا پر وائرل ہوئے اور اس پر کافی تنازع بھی ہوا ۔ اس معاملے کا ایک دوسرا رخ یہ بھی ہے کہ دھرم سنسد میں اشتعال انگیز تقاریر کرنے کے ملزم وسیم رضوی عرف جتیندر تیاگی نے ہریدوار پہنچ کر شمبھوی دھام آشرم میں سنتوں اور سنتوں سے ملاقات کی اور پھر اس 'دھرم سنسد' میں حصہ لینے والے یتی نرسمہانند سمیت کچھ دوسرے لوگ بھی پہنچ گئے ۔

    ہریدوار پولیس اسٹیشن، جہاں اس نے ایک شکایت درج کرائی ، جس میں مسلمان علما  پر ہندوؤں کے خلاف سازش کرنے کا الزام لگایا ۔ ایف آئی آر درج کرنے اور انہیں سزا دینے کا مطالبہ کیا گیا تھا ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: