உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    حجاب تنازعہ: سپریم کورٹ پہنچے طلبا، کرناٹک ہائی کورٹ کے عبوری حکم کو کیا چیلنج

    Youtube Video

    Hijab Row Update:حجاب کیس کی سماعت کرنے والی کرناٹک ہائی کورٹ نے جمعرات کو طلبا سے کہا کہ وہ ایسے لباس پہننے پر زور نہ دیں جو اس معاملے کے حل ہونے تک تعلیمی اداروں کے احاطے میں جس سے لوگوں کو اکسایا جاسکے۔

    • Share this:
      سی بی نئی دہلی۔ حجاب کے معاملے  (Hijab Row)  میں کرناٹک ہائی کورٹ  (Karnataka High Court)  کی طرف سے دیے گئے عبوری حکم کو سپریم کورٹ   (Supreme Court)میں چیلنج کیا گیا ہے۔ جمعرات کو ہائی کورٹ نے معاملہ زیر التوا ہونے تک کسی بھی مذہبی لباس یا حجاب کو پہننے پر پابندی لگا دی تھی۔ اپیل کنندگان کا کہنا ہے کہ یہ عبوری حکم مسلم اور غیر مسلم طالبات کے درمیان تفریق پیدا کرتا ہے۔ کرناٹک میں تعلیمی اداروں میں حجاب پہننے پر تنازعہ گرم ایا ہوا ہے۔

      بار اینڈ بنچ کے مطابق درخواست گزار رحمت اللہ کوٹھوال اور عدیل احمد نے سپریم کورٹ میں اپیل دائر ہونے کی تصدیق کی ہے۔ عرضی گزاروں کا کہنا ہے کہ کرناٹک ہائی کورٹ کے عبوری حکم سے سیکولرازم کو سیدھے ٹھیس پہنچتی ہے، جو کہ آئین کے بنیادی ڈھانچے کا حصہ ہے۔

       

      ہائی کورٹ نے کیا کہا

      حجاب کیس کی سماعت کرنے والی کرناٹک ہائی کورٹ نے جمعرات کو طلبا سے کہا کہ وہ ایسے لباس پہننے پر زور نہ دیں جو اس معاملے کے حل ہونے تک تعلیمی اداروں کے احاطے میں جس سے لوگوں کو اکسایا جاسکے۔ عدالت نے معاملہ پیر کو سماعت کے لیے مقرر کرتے ہوئے یہ بھی کہا کہ تعلیمی ادارے طلبا کے لیے دوبارہ کلاسز شروع کرسکتے ہیں۔

      (بھاشا ان پٹ کے ساتھ)
      Published by:Sana Naeem
      First published: