உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہماچل میں بھاری بارش، گوہر پہاڑ دھنسا، پردھان کے گھر Landslide، ملبے میں دبے 7افراد

     کاشان پنچایت کے موجودہ سربراہ کھیم سنگھ کے پکے مکان میں مکان کے پیچھے پہاڑ سے آنے والے ملبے کی وجہ سے تمام لوگ دب گئے ہیں۔

    کاشان پنچایت کے موجودہ سربراہ کھیم سنگھ کے پکے مکان میں مکان کے پیچھے پہاڑ سے آنے والے ملبے کی وجہ سے تمام لوگ دب گئے ہیں۔

    کاشان پنچایت کے موجودہ سربراہ کھیم سنگھ کے پکے مکان میں مکان کے پیچھے پہاڑ سے آنے والے ملبے کی وجہ سے تمام لوگ دب گئے ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Himachal Pradesh, India
    • Share this:
      Landslide in Mandi: ہماچل پردیش میں محکمہ موسمیات کی جانب سے منڈی ضلع میں شدید بارش کے حوالے سے دی گئی وارننگ درست ثابت ہوئی ہے۔  دیر رات سے ہونے والی موسلادھار بارش کی وجہ سے ضلع میں تباہی مچی ہوئی ہے۔ منڈی ضلع کے گوہر سب ڈویژن کے پنچایت کاشان کے گاؤں جدون میں ایک ہی خاندان کے 7 افراد کے پہاڑی کے نیچے دبنے کی خبر سامنے آئی ہے۔ کاشان پنچایت کے موجودہ سربراہ کھیم سنگھ کے پکے مکان میں مکان کے پیچھے پہاڑ سے آنے والے ملبے کی وجہ سے تمام لوگ دب گئے ہیں۔

      معلومات کے مطابق کھیم سنگھ کے دو منزلہ مکان میں تمام کنبہ کے افراد گہری نیند سو رہے تھے۔ اس دوران دیر رات  سے جاری موسلادھار بارش نے بھیانک شکل اختیار کر لی اور گھر کے 7 افراد کو اپنی زد میں لے لیا۔ جس کی وجہ سے کاشان علاقے میں افراتفری مچ گئی ہے۔ گاؤں والوں کی طرف سے کھیم سنگھ کے خاندان کو بچانے کے لیے ہر طرح کی کوششیں کی جا رہی ہیں۔ ریسکیو ٹیم ابھی تک موقع پر نہیں پہنچی ہے۔




      سب ڈویژن میں درجنوں مقامات پر شدید لینڈ سلائیڈنگ سے کئی سڑکیں بند ہو گئی ہیں۔ سڑک بند ہونے سے گوہر انتظامیہ کے اہلکار بھی لینڈ سلائیڈنگ میں پھنس گئے ہیں۔ دوسری جانب محکمہ تعمیرات عامہ کی جے سی بی مشین سڑکیں کھولنے میں مصروف ہے۔

      ایس ڈی ایم گوہر رمن شرما نے بتایا کہ ریسکیو ٹیم کو موقع پر پہنچنے میں مشکلات کا سامنا ہے۔ ٹیم صبح 4 بجے سے جائے وقوعہ کی طرف روانہ ہو گئی ہے تاہم سڑک بند ہونے کی وجہ سے جائے وقوعہ تک پہنچنا مشکل ہو رہا ہے۔ ملبے تلے دبے لوگوں کو نکالنے کی ہر ممکن کوشش کی جائے گی۔ فی الحال تیز بارش کے پیش نظر منڈی ضلع میں ہفتہ کو تعطیل کا اعلان کیا گیا ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: