உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    تدفین کے بعد قبر سے دوبارہ نکالی گئی لاش تو ہوا یہ بڑا انکشاف ، جانئے پورا معاملہ

    تدفین کے بعد قبر سے دوبارہ نکالی گئی لاش تو ہوا یہ بڑا انکشاف ، جانئے پورا معاملہ

    Himachal Pradesh News: پولیس نے اس معاملہ میں دو ملزمین کو گرفتار کیا ہے ۔ پولیس نے پوچھ گچھ کرنے کے بعد دونوں کو نالاگڑھ عدالت میں پیش کیا اور انہیں کورٹ سے پانچ دنوں کی ریمانڈ پر لے لیا ۔ پولیس کا دعوی ہے کہ ہفتہ کی رات تک ایک دیگر ملزم کو بھی گرفتار کرلیا جائے گا ۔

    • Share this:
      سولن : ہماچل پردیش کے سولن ضلع میں پوسٹ مارٹم ہاوس کے ڈاکٹر اور ملازمین کی بڑی چوک سامنے آئی ہے ۔ یہاں پوسٹ مارٹم کے دوران لاش کے سر میں کٹ نہیں لگایا گیا ، جس سے مرنے والے نوجوان کی موت کی اصل وجہ سامنے نہیں آسکی ۔ قتل کے ثبوت کو اکٹھا کرنے کیلئے لاش کو دوبارہ قبر سے نکالا گیا اور پینل کے ذریعہ پوسٹ مارٹم کرایا گیا ، جس میں لاش کے گلے میں اٹکی ہوئی 315 بور کی گولی برآمد ہوئی ۔ گولی سر کی بائیں جانب ماری گئی تھی ۔ ہماچل پردیش پولیس نے پوسٹ مارٹم رپورٹ میں قتل کے انکشاف کے بعد لاش کو پھر سے سپرد خاک کردیا ۔

      پولیس نے اس معاملہ میں دو ملزمین کو گرفتار کیا ہے ۔ پولیس نے پوچھ گچھ کرنے کے بعد دونوں کو نالاگڑھ عدالت میں پیش کیا اور انہیں کورٹ سے پانچ دنوں کی ریمانڈ پر لے لیا ۔ پولیس کا دعوی ہے کہ ہفتہ کی رات تک ایک دیگر ملزم کو بھی گرفتار کرلیا جائے گا ۔

      پولیس سے ملی جانکاری کے مطابق بسولی کوتوالی حلقہ کے گاوں لکشمی پور کا عبد الکلام سولن ضلع کے بروٹی والا تھانہ حلقہ کے بدی علاقہ میں رہ کر فرنیچر بنانے کا کام کرتا تھا ۔ اس کے ساتھ اسی گاوں کے حشمت اور فیضان بھی رہتے تھے ۔ اس کے علاوہ سنگرام پور کا شمشل بھی ساتھ ہی رہتا تھا ۔ گزشتہ 23 جولائی کو عبدالکلام کی مشتبہ حالت میں موت ہوگئی تھی ۔ پولیس نے اس کو حادثہ قرار دیتے ہوئے لاش کا پوسٹ مارٹم کروایا اور اس کے اہل خانہ کو سونپ دیا تھا ۔ اہل خانہ نے گاوں کے قبرستان میں اس کی تدفین کردی ۔

      عبد الکلام کے اہل خانہ نے پولیس سے اس کی موت کی جانچ کرنے کی مانگ کی ، جس کے بعد پولیس نے  نالاگڑھ علاقہ میں واقع پٹرول پمپ کے سی سی ٹی وی کیمروں کی فوٹیج کو کھنگالا تو یہ حادثہ نہیں بلکہ قتل کا معاملہ نکلا ۔ اس بنیاد پر پولیس نے عبد الکلام کے ساتھیوں کو حراست میں لے کر ان سے پوچھ تاچھ کی ۔

      پولیس نے ڈی ایم دیپا رنجن کو خط لکھ کر لاش کا دوبارہ پوسٹ مارٹم کرانے کا مطالبہ کیا ، جس کے بعد ڈی ایم نے جمعرات رات کو اس کی اجازت دیدی ۔ جمعہ کی صبح بروٹی والا تھانہ کی پولیس نے بسولی پولیس کی مدد سے عبد الکلام کی قبر کھودی اور اس کی لاش کو باہر نکال کر پوسٹ مارٹم کیلئے بھیج دیا ۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں قتل کے ملزمین کے ذریعہ سر میں ماری گئی گولی لاش کے گلے سے برآمد ہوئی ۔ اس سلسلہ میں بسولی کوتوال رشی پال سنگھ نے بتایا کہ قبر سے لاش کو نکالا گیا اور پینل می پوسٹ مارٹم کرایا گیا ۔

      ڈی ایس پی بدی نودیپ سنگھ نے بتایا کہ معاملہ میں پولیس نے دو ملزمین کو گرفتار کیا ہے جبکہ ایک دیگر ملزم کو بھی ہفتہ رات تک گرفتار کرلیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ملزمین کو نالاگڑھ عدالت میں پیش کرنے کے بعد پانچ دنوں کی ریمانڈ پر لے لیا گیا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: