உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    چیف سکریٹری بدسلوکی معاملہ: وزارت داخلہ نے لیفٹننٹ گورنر سے طلب کی رپورٹ

    دہلی کے چیف سکریٹری انشو پرکاش کی فائل فوٹو۔

    دہلی کے چیف سکریٹری انشو پرکاش کی فائل فوٹو۔

    وزارت داخلہ نے عام آدمی پارٹی کے ایک رکن اسمبلی کے ذریعہ دہلی کے چیف سکریٹری انشو پرکاش کے ساتھ مبینہ طورپر بدسلوکی کے معاملہ میں لیفٹننٹ گورنر سے رپورٹ مانگی ہے۔ذرائع کے مطابق وزارت داخلہ کو اس واقعہ کی اطلاع ہے۔ وہ اس پر گہری نظر رکھے ہوئے ہے۔ وزارت نے لیفٹننٹ گورنر سے اس معاملہ کی تفصیلی رپورٹ دینے کے لئے کہا ہے ۔ ذرائع کے حوالے سے کہا گیاہیکہ اگر اس معاملہ میں شکایت درج کرائی جاتی ہے تو پولیس ثبوتوں کی بنیادی پر آگے کی کارروائی کے بارے میں فیصلہ کرے گی۔

    • Reuters
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی۔ وزارت داخلہ نے عام آدمی پارٹی کے ایک رکن اسمبلی کے ذریعہ دہلی کے چیف سکریٹری انشو پرکاش کے ساتھ مبینہ طورپر بدسلوکی کے معاملہ میں لیفٹننٹ گورنر سے رپورٹ مانگی ہے۔ذرائع کے مطابق وزارت داخلہ کو اس واقعہ کی اطلاع ہے۔ وہ اس پر گہری نظر رکھے ہوئے ہے۔ وزارت نے لیفٹننٹ گورنر سے اس معاملہ کی تفصیلی رپورٹ دینے کے لئے کہا ہے ۔ ذرائع کے حوالے سے کہا گیاہیکہ اگر اس معاملہ میں شکایت درج کرائی جاتی ہے تو پولیس ثبوتوں کی بنیادی پر آگے کی کارروائی کے بارے میں فیصلہ کرے گی۔
      دہلی کے چیف سکریٹری انشو پرکاش کے ساتھ پیر کی رات وزیراعلی اروند کیجریوال کی رہائش گاہ پر مبینہ طورپر بدسلوکی کا معاملہ سامنے آنے کے بعد دہلی ایڈمنسٹریٹو سب آرڈی نیٹ سروسز (ڈی اے ایس ایس) کے حکام نے مسٹر پرکاش کے ساتھ ہوئی بدسلوکی کے خلاف احتجاجاََ کام نہیں کرنے کا اعلان کیا ہے۔

      ڈی اے ایس ایس کے صدر ڈی این سنگھ نے آج یہاں میڈیا سے بات چیت میں کہا کہ ہم چیف سکریٹری کے ساتھ ہیں ۔ جب تک ملزمین کو گرفتار نہیں کرلیا جاتا کام پر واپس نہیں آئیں گے۔ ہم فوری طورپر ہڑتال پر جارہے ہیں۔
      سنگھ نے کہاکہ لیفٹننٹ گورنر انل بیجل سے اس واقعہ کے لئے ذمہ دار لوگوں کے خلاف قانونی کارروائی کی درخواست کی گئی ہے۔ یہ آئینی بحران جیسا ہے۔اس درمیان انڈین ایڈمنسٹریٹیو سروس ایسوسی ایشن کے نمائندوں نے بھی لیفٹننٹ گورنر انل بیجل سے ملاقات کرکے اپنا موقف رکھنے کی بات کہی ہے۔
      First published: