உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کشمیرمیں کسی سے بھی بات چیت میں پیچھے نہیں ہٹے گی ہماری حکومت: راجناتھ سنگھ

    وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ: فائل فوٹو

    وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ: فائل فوٹو

    وزیرداخلہ نےکہا کہ پاکستان نے ہندوستان میں دہشت گردی کواسپانسرکرنے اوراس کو فروغ دینے کا اپنا کام جاری رکھا ہوا ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      سری نگر: مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ  کہا کہ حکومت ہند وادی کشمیر میں کسی سے بھی بات چیت کرنے کے لئے تیارہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت بات چیت سے کبھی پیچھے نہیں ہٹے گی۔ تاہم وزیرداخلہ نے پاکستان سے بات چیت پرکہا کہ "بات چیت اوردہشت گردی ساتھ ساتھ نہیں چل سکتے"۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان نے بھارت میں دہشت گردی کواسپانسر کرنے اوراس کو فروغ دینے کا اپنا کام جاری رکھا ہوا ہے۔
      وزیرداخلہ نے دعویٰ کیا کہ وادی کشمیرکی سیکورٹی صورتحال میں بہتری آئی ہے، سنگبازی کے واقعات اور ملی ٹینٹ ریکروٹمنٹ میں کمی دیکھی گئی ہے۔ جموں وکشمیرکے گرمائی دارالحکومت سری نگر میں گزشتہ روزایک روزہ دورے پرآنے والے راجناتھ سنگھ منگل کی شام یہاں ایک نیوزکانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔

      انہوں نے کشمیری علیحدگی پسند رہنماؤں سے بات چیت سے متعلق ایک سوال کے جواب میں کہا ’میں باربارکہتا آیا ہوں۔ جو بات کرنا چاہتے ہیں، ہم سب سے بات چیت کرنے کے لئے تیار ہیں۔ آپ پوچھیں گے کہ اس حوالے سے کیا پہل ہورہی ہے۔ میں اس کی جانکاری نہیں دے سکتا، مگر پہل ہورہی ہے‘۔

      یہ بھی پڑھیں:    کولگام: عام شہریوں کی ہلاکت سے ہمیں بہت تکلیف پہنچی ہے: راجناتھ سنگھ

      انہوں نے کہا ’میں اس بات کو ایمانداری سے دوہرانا چاہتا ہوں کہ جو لوگ بھی بات کرنا چاہتے ہیں، ہم سب سے بات کریں گے۔ ہم بات کرنے سے کبھی پیچھے نہیں رہیں گے‘۔ تاہم وزیر داخلہ نے پاکستان سے بات چیت پر کہا کہ ’بات چیت اوردہشت گردی ساتھ ساتھ نہیں چل سکتے‘۔ ان کا کہنا تھا ’جہاں تک بات چیت کا سوال ہے، ہمیں کسی سے بات چیت کرنے میں کوئی پرہیزنہیں ہے، لیکن ہماری شرط یہ ہے کہ کم ازکم وہ اس بات کو دیکھیں۔

      یہ بھی پڑھیں:    ترقی یافتہ اور خوشحال جموں وکشمیر کا خواب صرف امن سے شرمندہ تعبیر ہوگا: راجناتھ

      راجناتھ سنگھ نے کہا کہ ہندوستان  میں دہشت گردی کو پاکستان اسپانسرکررہا ہے۔ دہشت گردی کو فروغ دینے کی کوشش کررہا ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ وہ ہمیں اس بات کا یقین دلائیں کہ پاکستان کی طرف سے ایسی کوئی کوشش نہیں ہوگی‘۔ انہوں نے کہا ’دہشت گردی اوربات چیت ساتھ ساتھ نہیں چل سکتے۔

      یہ بھی پڑھیں:    راجناتھ سنگھ نے ریاستوں کوروہنگیا پناہ گزینوں کے بایومیٹرک ڈیٹا جمع کرنے کا حکم دیا

      وزیرداخلہ نے کہا کہ ہندوستان نے اپنی طرف سے بھرپورکوشش کی ہے۔ ہمارے وزیراعظم (نریندرمودی) نے تمام پروٹوکول کو توڑکروہاں کے وزیراعظم اوران کے اہل خانہ سے ملاقات کی تھی۔ کس لئے ملاقات کی تھی، وہ اس لئے کہ پاکستان ہمارا ایک پڑوسی ہے اور پڑوسی کے ساتھ اچھے تعلقات ہونے چاہئے، لیکن ان کی طرف سے کوئی مثبت قدم نہیں اٹھائے گئے ہیں‘۔

      یہ بھی پڑھیں:     میانمار میں اظہار رائے کی آزادی خطرے میں: سوچی کے خلاف ’پوسٹ ‘پر کالم نگار کو سات سال کی سزا

      First published: