உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہوٹل میں بلاکر لڑکی کرتی تھی یہ انتہائی گھنونا کام، ہنی ٹریپ میں پھنسانے والے گروپ کا پردہ فاش، فوجیوں تک کو بنایا نشانہ

    پولیس کے مطابق یہ گروپ پہلے لوگوں کی نشاندہی کرکے فون نومبر یا سوشل میڈیا کے ذریعہ رابطہ قائم کرتا تھا اور پھر لڑکی اُس شخص کو اپنی باتوں کے جال میں پھنسا کر ہوٹل میں بلاتی تھی جہاں چوری سے ویڈیو بنا لی جاتی تھی اور پھر اُس شخص کو بلیک میل کیا جاتا تھا۔

    پولیس کے مطابق یہ گروپ پہلے لوگوں کی نشاندہی کرکے فون نومبر یا سوشل میڈیا کے ذریعہ رابطہ قائم کرتا تھا اور پھر لڑکی اُس شخص کو اپنی باتوں کے جال میں پھنسا کر ہوٹل میں بلاتی تھی جہاں چوری سے ویڈیو بنا لی جاتی تھی اور پھر اُس شخص کو بلیک میل کیا جاتا تھا۔

    • Share this:
    فوج کے جوانوں کو ہنی ٹریپ میں پھنسا کر بلیک میل کرنے والے گینگ کا میرٹھ پولیس نے پردہ فاش کردیا ہے ۔ پولیس نے اس گروپ کے چار لوگوں کو گرفتار کیا ہے جن میں ایک لڑکی بھی شامل ہے ۔ پولیس کے مطابق اس لڑکی کے ذریعے گروپ ہریانہ، راجستھان اور گجرات کے فوجیوں کو ہنی ٹریپ میں پھنساتا تھا پھر ہوٹل میں بلا کر ویڈیو بنالی جاتی تھی اور پھر بلیک میلنگ کا کھیل شروع ہوتا تھا۔

    پولیس کے مطابق یہ گروپ اب تک اس طرح کی ایک درجن سے زیادہ وارداتوں کو انجام دے چکا ہے۔ ایسے ہی ایک معاملے میں نوچندی تھانہ پولیس اور سائبر سیل میں شکایت کے بعد پولیس نے ہوٹل کے سی سی ٹی وی فوٹیج سے سراغ حاصل کرکے گروپ کا پردہ فاش کر دیا۔ ملزمین کے پاس سے لڑکی کی 12 فرضی آئی ڈی اور موبائل برآمد ہوئے ہیں۔ سائبر سیل اور تھانہ پولیس اس گروپ کے دیگر تین افراد کی بھی تلاش کر رہی ہے اور معاملہ ہنی ٹریپ کا ہونے کے سبب گہرائی سے جانچ کر رہی ہے۔

    پولیس کے مطابق یہ گروپ پہلے لوگوں کی نشاندہی کرکے فون نومبر یا سوشل میڈیا کے ذریعہ رابطہ قائم کرتا تھا اور پھر لڑکی اُس شخص کو اپنی باتوں کے جال میں پھنسا کر ہوٹل میں بلاتی تھی جہاں چوری سے ویڈیو بنا لی جاتی تھی اور پھر اُس شخص کو بلیک میل کیا جاتا تھا۔ مظفر نگر کے ایک شخص کو اسی طرح ٹھگ کر پیسہ اور زیور تک نکال لیے گئے۔
    Published by:sana Naeem
    First published: